آرمی چیف کا دورہ مصر؛

"قاہرہ" بارودی سرنگوں کے خاتمے کیلئے پاک فوج کے تجربات سے فائدہ اٹھائے گی

خبر کا کوڈ: 1140374 خدمت: دنیا
راحیل شریف در مصر

آرمی چیف جنرل "راحیل شریف" دو روزہ سرکاری دورے پر قاہرہ پہنچ گئے ہیں جہاں مصری حکام نے دہشت گردی کیخلاف اور بارودی سرنگوں کے خاتمے کیلئے پاک فوج کے تجربات سے فائدہ اٹھانے میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

تسنیم نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق، آرمی چیف جنرل "راحیل شریف" دو روزہ سرکاری دورے پر قاہرہ پہنچ گئے ہیں جہاں مصری فوج کی جانب سے شاندار استقبال کے ساتھ ساتھ، گارڈ آف آنر بھی پیش کیا گیا۔

روزنامہ امت کے مطابق، آئی ایس پی آر نے آرمی چیف کے مصر دورے کے بارے میں جاری اعلامیے میں کہا ہے کہ جنرل راحیل شریف نے اپنے مصری ہم منصب اور وزیر دفاع سے علیحدہ علیحدہ ملاقاتیں کی جس میں اس ملک کے حکام نے دہشت گردی کیخلاف اور بارودی سرنگوں کے خاتمے کیلئے پاک فوج کے تجربات سے فائدہ اٹھانے میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔

اس موقع پر دونوں مسلح افواج کے درمیان سیکیورٹی، دفاعی تعاون بڑھانے اور دہشت گردی کے خاتمے کیلئے کوششیں جاری رکھنے پر اتفاق کیا گیا۔

مصری اور پاکستانی حکام نے ان ملاقاتوں کے دوران دونوں ممالک کی مسلح افواج کی تربیت سے متعلق بھی بات چیت کی۔

یاد رہے کہ ریڈیو پاکستان نے کچھ عرصہ پہلے خبر دی تھی کہ مصر حکومت کے ساتھ سیاسی مذاکرات کا ساتواں دور قاہرہ میں منعقد ہوا۔

پاکستانی اور مصری حکام نے مذاکرات کے دوران مختلف شعبوں میں باہمی تعاون بالخصوص اہم علاقائی اور بین الاقوامی امور پر تبادلہ خیال کیا۔

دونوں ممالک کے حکام نے تجارتی اور اقتصادی تعلقات بڑھانے پر بھی اتفاق کیا تھا۔

پاک - مصر تعلقات کا آغاز 1947ء میں پاکستان کی آزادی کے بعد اس وقت ہوا جب قائد اعظم "محمد علی جناح" نے پہلی بار مصری بادشاہ "فواد دوئم" کی دعوت پر اس ملک کا دورہ کیا لیکن ان دو ممالک کے درمیان سفارتی تعلقات 1951ء میں شروع ہوئے۔

  پاکستان 1967ء اور 1973ء کی جنگوں میں مصر کا مکمل طور پر ساتھ دیا تھا۔

پاکستان نے مصر حکومت کو صیہونیوں کیخلاف ان جنگوں میں فوجی امداد، تکنیکی ماہرین اور فوجی افسر فراہم کئے تھے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری