سارک اجلاس میں شرکت کے لئے بھارتی وفد پاکستان پہنچ گیا

خبر کا کوڈ: 1196355 خدمت: پاکستان
قمر زمان چوہدری

جنوبی ایشیائی علاقائی تعاون کی تنظیم (سارک) کے اجلاس میں شرکت کے لیے بھارتی وفد پاکستان پہنچ گیا۔

تسنیم نیوز کے مطابق انسداد بدعنوانی کے حوالے سے منعقدہ سارک کی پہلی کانفرنس دو روز تک جارہی رہے گی اور اس کی میزبانی پاکستان کا وفاقی احتساب بیورو (نیب) کررہا ہے۔

روزنامہ ڈان نے اطلاع دی ہے کہ بھارت کے سینٹرل ویجیلنس کمشین کے سربراہ شری پریمانشو بسواس کی سربراہی میں بھارتی وفد کا استقبال ایئرپورٹ پر نیب کے حکام نے کیا۔

نیب کے ترجمان کے مطابق کانفرنس میں شرکت کرنے کے لئے بھارت، سری لنکا، نیپال، بھوٹان، مالدیپ کے وفود پاکستان پہنچ چکے ہیں۔

بھارتی ذرائع ابلاغ نے اس سے قبل یہ خبر تھی کہ وزیراعظم نریندر مودی کشمیر کی موجودہ صورتحال کے پیش نظر پاکستان میں نومبر میں منعقد ہونے والی سارک سربراہ کانفرنس میں شرکت نہیں کریں گے۔

نیب کے چیئرمین قمر زمان چوہدری کا کہنا ہے کہ ’بدعنوانیت کے خلاف جنگ میں سارک ممالک کے درمیان تعاون اور معاونت کو مزید مستحکم کرنے کے لیے اس بات کا فیصلہ کیا گیا تھا کہ سارک ممالک کا اینٹی کرپشن فورم تشکیل دیا جائے گا‘۔

انہوں نے کہا کہ کانفرنس میں جنوبی ایشیا میں کرپشن کی بنیادی وجوہات پر غور کیا جائے گا جبکہ رکن ممالک کرپشن کے خلاف جنگ میں اپنے تجربے سے دیگر ممالک کو بھی آگاہ کریں گے۔

چیئرمین نیب کا یہ بھی کہنا تھا کہ اس کانفرنس سے سارک ممالک کو کرپشن کے خلاف مل کر کام کرنے کا موقع ملے گا جو خطے میں ترقی کی راہ میں سب سے بڑی رکاوٹ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ کرپشن سے نمٹنے کے لیے کانفرنس کے شرکاء بدعنوانی کی تحقیقات، سزائیں، عالمی تعاون، اثاثوں کی واپسی، تکنیکی معاونت اور معلومات کے تبادلے پر بھی غور کریں گے تاکہ کرپشن کے خلاف جنگ کے لیے ایک مشترکہ لائحہ عمل تشکیل پا سکے۔

واضح رہے کہ پاکستان اور بھارت کے درمیان تعلقات میں جاری کشیدگی کے موجودہ تناظر میں کانفرنس میں بھارتی وفد کی شرکت انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری