بنگلہ دیش؛ سیکیورٹی فورسز کی کاروائی میں 11 شدت پسند ہلاک

خبر کا کوڈ: 1208834 خدمت: دنیا
بنگلہ دیش سیکیورٹی فورس

بنگلہ دیشی سیکیورٹی فورسز نے 11 مشتبہ شدت پسندوں کو ہلاک کرنے کا دعویٰ کیا ہے جن میں ڈھاکا کیفے حملے میں ملوث کالعدم تنظیم کا نیا سربراہ بھی شامل ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم نیوز کے مطابق، بنگلہ دیشی سیکیورٹی فورسز نے تازہ کاروائی میں 11 شدت پسندوں کو ہلاک کر دیا ہے۔

روزنامہ ڈان نیوز نے بنگلہ دیشی وزیر داخلہ اسد الزماں خان کا بیان نقل کیا ہے کہ ہلاک ہونے والے تمام شدت پسندوں کا تعلق جمعیت المجاہدین بنگلہ دیش (جے ایم بی) نامی نئی تنظیم سے تھا۔

انہوں نے بتایا کہ تمیم چوہدری کی ہلاکت کے بعد نئی جمعیت المجاہدین بنگلہ دیش کا قائد آکاش بھی مذکورہ کاروائی میں ہلاک ہوا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ڈھاکا کے باہر ضلع غازی پور کے علاقے میں شدت پسندوں کو ہتھیار پھینکنے کی پیشکش کی گئی جس کے انکار پر سیکیورٹی فورسز سے  فائرنگ کے تبادلے میں تمام شدت پسند مارے گئے۔

واضح رہے کہ تمیم چوہدری اگست کے مہینے میں فائرنگ کے تبادلے میں مارا گیا تھا اور پولیس کا دعویٰ ہے کہ وہ جمعیت المجاہدین بنگلہ دیش (جے ایم بی) کا سربراہ تھا اور ڈھاکا کیفے حملے میں ملوث تھا جس میں 22 افراد ہلاک ہوئے تھے۔

یاد رہے کہ مذکورہ حملے کی ذمہ داری دہشت گرد تنظیم داعش نے قبول کر لی تھی تاہم بنگلہ دیشی حکام نے اس دعوے کو مسترد کرتے ہوئے دعویٰ کیا تھا کہ یہ حملہ تمیم چوہدری کی قیادت میں جے ایم بی نےکیا تھا۔

دوسری جانب، بنگلادیشی وزیر داخلہ نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ صنعتی علاقوں میں مارے جانے والے چھاپوں کے دوران بھی 7 شدت پسند گرفتار ہوئے ہیں۔

یہ شدت پسند افراد اپنے مالی اخراجات پورے کرنے کے لئے چوری و ڈکیٹی کرتے تھے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری