بلوچستان: ڈیرہ بگٹی میں 43 فراریوں نے ہتھیار ڈال دیے

خبر کا کوڈ: 1216614 خدمت: پاکستان
براہمداغ بگٹی

ڈیرہ بگٹی میں کالعدم بلوچ ریپبلکن آرمی (بی آر اے) کے 43 فراریوں نے براہمداغ بگٹی سے لاتعلقی کا اظہار کرتے ہوئے ہتھیار ڈال دیے ہیں۔

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق، کالعدم تنظیم بلوچ ریپبلکن آرمی کے کارندوں کا براہمداغ بگٹی سے راہیں علیحدہ کرنے کا سلسلہ جاری ہے۔

تفصیلات کے مطابق،  فرنٹیئر کور (ایف سی) کے ترجمان خان واسع کا کہنا تھا کہ فراریوں نے سیکیورٹی فورسز کی نگرانی میں ہتھیار ڈالنے کا اعلان کیا ہے۔

ڈان نیوز نے رپورٹ دی ہے کہ اس موقع پر فراری کمانڈروں کا کہنا تھا کہ براہمداغ بگٹی کی بھارتی رغبت اور حمایت سے بدظن ہوکر ان سے راہیں جدا کر رہے ہیں۔

خیال رہے کہ صوبہ بلوچستان میں جاری خونریزی کو ختم کرنے کی غرض سے سابق وزیر اعلیٰ ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ کی زیر سرپرستی صوبائی حکومت نے سیاسی مفاہمتی پالیسی کا اعلان کیا تھا۔

اس پالیسی کے اعلان کے بعد مختلف کالعدم تنظیموں کے سینکڑوں فراری ہتھیار ڈال چکے ہیں۔

رواں سال مئی میں کالعدم تنظیم بلوچ لبریشن آرمی (بی ایل اے) کے کمانڈر احمد نواز نے بلوچستان کے علاقے خاران میں فورسز کے سامنے ہتھیار ڈالے تھے۔

قبل ازیں، قلات کے علاقے میں ایک تقریب کے دوران 144 فراریوں نے حکام کے سامنے ہتھیار ڈالے۔

اپریل میں بلوچستان کے سیکریٹری داخلہ اکبر حسین درانی نے ایک انٹرویو میں بتایا تھا کہ صوبے میں سیاسی مفاہمت کی پالیسی کے اعلان کے بعد متعدد کالعدم تنظیموں سے تعلق رکھنے والے 1025 فراری حکومت کے سامنے ہتھیار ڈال چکے ہیں۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری