سی پیک کے تحت آزمائشی تجارتی سرگرمیوں کا آغاز

پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) کے تحت پاکستان اور چین کے درمیان آزمائشی تجارتی سرگرمیوں کا آغاز ہوگیا ہے۔

سی پیک کے تحت آزمائشی تجارتی سرگرمیوں کا آغاز

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق، گزشتہ روز 100 کے قریب چینی کنٹینرز سوست ڈرائی پورٹ میں داخل ہوئے جن کا وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حفیظ الرحمان اور آرمی کے فورس کمانڈر برائے جی بی ثاقب ملک محمود کی جانب سے پُرتپاک استقبال کیا گیا۔

واضح رہے کہ سوست ہنزہ کا ایک گاؤں ہے اور قراقرم ہائی وے پر واقع یہ پاکستان کا آخری قصبہ ہے جس کے بعد چینی سرحد کا آغاز ہو جاتا ہے۔

سوست پورٹ پر کسٹمز کلیئرنس ملنے کے بعد چینی کنٹینرز گوادر کی بندرگاہ کی جانب روانہ ہوگئے۔

واضح رہے کہ ایک روز قبل اس پورٹ پر تجارتی سرگرمیوں کی افتتاحی تقریب بھی منعقد کی گئی تھی۔

روزنامہ ڈان نیوز نے اطلاع دی ہے کہ افتتاحی تقریب میں چینی حکام کے ساتھ ساتھ گلگت بلتستان کے وزیر اعلیٰ حفیظ الرحمٰن اور فورس کمانڈر ثاقب محمود ملک نے بھی شرکت کی۔

اس موقع پر اپنے خطاب میں حفیظ الرحمٰن نے کہا کہ سی پیک گلگت بلتستان کی قسمت بدل دے گا، ہر ہفتے قراقرم ہائی وے کے ذریعے ایک ہزار چینی کنٹینرز گلگت بلتستان سے گزریں گے۔

اپنے خطاب میں وزیراعلیٰ گلگت بلتستان حفیظ الرحمان نے کہا کہ 51 ارب روپے کے سی پیک منصوبے میں سے اب تک 11 ارب روپے خرچ ہوچکے ہیں۔

وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ان تجارتی سرگرمیوں کے نتیجے میں اس خطے میں بے روزگاری کا خاتمہ ہوگا اور خوشحالی آئے گی۔

مربوط خبریں
سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری