تکفیری دہشت گرد تنظیمیں پاکستان کی سالمیت کیلئے سب سے بڑا خطرہ ہیں، مجلس وحدت مسلمین

خبر کا کوڈ: 1245830 خدمت: پاکستان
ایم ڈبلیو ایم

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کراچی ڈویژن کے رہنماؤں نے کہا ہے کہ ایم ڈبلیو ایم ایک ایسی جماعت ہے جو ہمیشہ دہشت گردی اور تکفیریت کے خلاف رہی ہے، جو ادارے اور شخصیات دہشت گردی کے خلاف ہیں ہم ان کے ساتھ ہیں۔

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق، وحدت ہاؤس سولجر بازار میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے علامہ مبشر حسن، علامہ علی انور جعفری، علامہ صادق جعفری، میر تقی ظفر، ناصر حسینی نے کہا ہے کہ کراچی سمیت سندھ بھر میں کالعدم تنظیمیں ناصرف آزادانہ فعالیت جاری رکھے ہوئے ہیں بلکہ آئے روز محب وطن اہل تشیع مسلمانوں کو دہشتگردی و بربریت کا نشانہ بنا رہے ہیں، سندھ سمیت ملک بھر میں افراتفری و بدامنی پھیلانے کی سازشوں میں مصروف کالعدم دہشتگرد تنظیمیں ہی ملکی سالمیت کیلئے سب سے بڑا خطرہ ہیں۔

رہنماؤں نے علامہ مرزا یوسف حسین کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ علامہ مرزا یوسف جنہوں نے ہمیشہ امن و دوستی کا پیغام دیا، اتحاد بین المسلمین کا پرچار کرتے رہے، تمام مکاتب فکر کے ساتھ مل کر دہشت گردی کیخلاف آواز بلند کی، محض بیلنس پالیسی کے تحت انہیں پابند سلاسل کیا گیا اور جن لوگوں نے اس ظلم کے خلاف آواز بلند کی ان پر بھی بے بنیاد ایف آئی آر بنادی گئی، یہ کونسا قانون ہے کہ آپ قاتل اور مقتول کو ایک ہی صف میں کھڑا کررہے ہیں، نیشنل ایکشن پلان دہشت گردوں کیخلاف بنا تھا لیکن اس کا رخ پرامن عوام کی جانب موڑ دیا گیا ہے۔

رہنماؤں نے سندھ حکومت سے مطالبہ کیا کہ چہلم امام حسین علیہ السلام کے موقع پر کراچی سمیت سندھ بھر میں سیکورٹی کو فول پروف بنایا جائے، اربعین امام حسین علیہ السلام کے موقع پر سندھ بھر میں ماتمی جلوس برآمد ہونگے جن کی سیکورٹی ریاستی اداروں کی ذمہ داری ہے، اہل تشیع آبادیوں میں بلاجواز گرفتاریوں کا سلسلہ بند کیا جائے، علامہ مرزا یوسف حسین سمیت دیگر اکابرین پر بے بنیاد مقدمات کو فوری واپس لیا جائے، کالعدم جماعتوں کی سرگرمیوں پر پابندی عائد کرتے ہوئے ان کے الیکشن لڑنے والے افراد کو نااہل قرار دیا جائے، نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کرتے ہوئے تکفیری دہشت گردوں کیخلاف بھرپور کاروائی کی جائے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری