نیا آرمی چیف بھارت کو کاؤنٹر کرنے کیلیے سخت جارحانہ پالیسی اپنائیں، پرویز مشرف

خبر کا کوڈ: 1251878 خدمت: پاکستان
پرویز مشرف

سابق صدر پرویز مشرف نے کہا ہے کہ بھارت کو کاؤنٹر کرنے کیلیے نئے آرمی چیف کو چاہئے کہ سخت جارحانہ پالیسی اپنائے تاکہ بھارت کو احساس ہو کہ پاکستان کمزور نہیں ہے اور وہ اپنی فل فورس استعمال کرسکتا ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق، سابق صدر پرویز مشرف نے کہا ہے کہ بھارت کو کاؤنٹر کرنے کیلیے نئے آرمی چیف کو سخت جارحانہ پالیسی اپنانا پڑیگی،  بھارت کو احساس ہونا چاہیے کہ پاکستان کمزور نہیں ہے اور وہ اپنی فل فورس استعمال کرسکتا ہے۔

ایکسپریس نیوز کے پروگرام جی فارغریدہ میں میزبان غریدہ فاروقی سے گفتگو میں انھوں نے کہا کہ نئے آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کوجانتا ہوں، میرے دور میں وہ جونیئر آفیسر تھے ۔ ان کی آئیڈیالوجی پاکستان اور پاکستان آرمی ہے، جو بھی فوجی آتا ہے وہ پاکستان اور پاکستانی فوج سے محبت کرتا ہے۔ سب کی آئیڈیالوجی یہ ہی ہونی چاہیے کہ سب سے پہلے پاکستان۔

ان کا کہنا تھا کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کیلیے دہشتگردی اور بھارت کو جواب دینا 2 بڑے چیلنجز ہونگے۔ پاکستان میں دہشت گردی روکنے کیلیے اقدامات بھی ان کی ذمے داری میں شامل ہوں گے۔

پرویز مشرف کا مزید کہنا تھا کہ ہماری خواہش امن ہی ہونی چاہیے لیکن دشمن کو کبھی بھی یہ محسوس نہیں ہونے دینا چاہیے کہ پاکستان کسی حوالے سے کمزور ہے۔

انہوں نے کہا کہ اب وہ ہمارا پانی روک رہے ہیں یعنی ہمیں پیاسا رکھنے کی بات کررہے ہیں وہ پانی روکیں ہم اس کا جواب دیں گے۔

انھوں نے کہا کہ کارگل آپریشن کامیاب ملٹری آپریشن تھا، ہم نے سرینگر سے لداخ تک سڑک کو کاٹ دیا تھا، ہم ایسی پوزیشن میں تھے کہ ان کی سیاچن سے بریگیڈ کو کاٹ سکتے تھے، اس سے ہٹنے کا اقدام ہمارا غلط فیصلہ تھا جو سیاسی بنیاد پر ہوا تھا۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری