نائیجیرین رہنما کا تسنیم نیوز کو انٹرویو؛

نائیجرین عوام کا قتل عام سعودی اور صہیونی اشاروں پر کیا جا رہا ہے

خبر کا کوڈ: 1253319 خدمت: انٹرویو
شیخ صالح احمد

نائیجیرین رہنما شیخ صالح احمد نے وضاحت کی ہے کہ نائیجرین حکومت سعودی عرب اور صہیونی ریاست کے اشاروں پر شیخ زکزکی اور مظلوم عوام کے خلاف انتقامی اور ظالمانہ کاروائیاں کر رہی ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے نامہ نگار سے گفتگو کرتے ہوئے نائیجیرین رہنما شیخ صالح احمد نے کہا ہے کہ نائیجیریا میں اسلامی تحریک کے جنرل سیکرٹری شیخ ابراہیم زکزکی کو حکومت شہید کرنا چاہتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ نائیجیریا میں شیخ زکزکی کے ہاتھوں پھیلتے ہوئے اسلام ناب محمدی صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم سے حکومت خوفزدہ ہے۔

نجف الاشرف میں تسنیم نیوز کے نمائندے سے بات کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ پوری دنیا کے شیعہ شیخ زکزکی کے لئے دعاگو رہیں تاکہ ان کی مشکلات میں کمی ہو سکے۔

انہوں نے کہا کہ شیخ زکزکی مریض ہیں، ان کی دونوں آنکھیں زخمی ہیں، انہیں نائیجیرین حکومت نے فائرنگ کا نشانہ بنایا تھا، حکومت نے یقینی طور پر انہیں شہید کر دیا تھا، لیکن وہ بال بال بچ گئے، اللہ نے انہیں محفوظ رکھا۔

انہیں فوری ڈاکٹروں سے چیک اپ کرانے کی ضرورت ہیں لیکن حکومت اجازت نہیں دے رہی۔

ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ حکومت شیخ زکزکی کو اس وجہ سے قتل کرنا چاہتی ہے کہ وہ لوگوں کو مذہب حقہ اور اسلام ناب محمدی یعنی حقیقی اسلام کی طرف دعوت دیتے ہیں۔ لیکن بھونکوں سے یہ چراغ نہیں بجایا جا سکتا، اگرچہ کافروں کو برا ہی کیوں نہ لگے۔

ان کا کہنا تھا کہ یہ بات واضح ہے کہ سعودی عرب اور صہیونی ریاست کے اشاروں پر شیخ زکزکی اور نائیجیرین عوام کے خلاف انتقامی اور ظالمانہ کاروائیاں کی جارہی ہے۔ ہماری حکومت دنیا کی بدترین حکومتوں میں سے ایک ہے۔

    تازہ ترین خبریں