بھارتی فوجی اڈے پر حملہ، دو اہلکار ہلاک

خبر کا کوڈ: 1253480 خدمت: پاکستان
سرباز ارتش هند در حال انجام وظیفه در پست

لائن آف کنٹرول کے قریب بھارتی فوجی اڈے پر مسلح افراد کے حملے کے نتیجے میں دو فوجی ہلاک ہوگئے۔

خبر رساں ادارے تسنیم نے ڈاون نیوز کے حوالے سے بتایا ہے کہ ایک سینئر پولیس افسر نے بتایا ہے کہ تین سے چار شدت پسند جموں و کشمیر کے علاقے ناگروٹا میں آرمی کور ہیڈ کوارٹرز میں داخل ہوئے اور انہوں نے آفیسرز میس کی جانب فائرنگ کی۔

انہوں نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا کہ حملے کے نتیجے میں دو فوجی اہلکار ہلاک ہوئے جبکہ فائرنگ کا تبادلہ جاری ہے۔

بھارتی وزارت دفاع کے ترجمان منیش مہتا نے بتایا کہ حملہ آوروں کے ساتھ فائرنگ کا تبادلہ جاری ہے تاہم انہوں نے ہلاک و زخمیوں کی تعداد بتانے سے گریز کیا۔

انہوں نے صحافیوں کو بتایا کہ علی الصبح دہشت گرد ہمارے فوجی علاقے میں داخل ہوئے تاہم صورتحال اب قابو میں ہے اور آپریشن مکمل ہونے کے بعد ہی تفصیلات سے آگاہ کیا جائے گا۔

واضح رہے کہ ناگروٹا بھارت کے زیر انتظام جموں و کشمیر میں واقع ہے جس کی سرحد پاکستان کے ساتھ ملتی ہے اور یہ علاقہ حالیہ دنوں میں سرحد پر ہونے والے فائرنگ کے تبادلے سے بہت زیادہ متاثر رہا ہے۔

یاد رہے کہ رواں برس 18 ستمبر کو جموں و کشمیر کے اُڑی سیکٹر میں ہندوستانی فوج کے ہیڈ کوارٹر پر مسلح افراد کے حملے میں 18 فوجی ہلاک ہوئے تھے، جبکہ جوابی کارروائی میں 4 حملہ آوروں کو بھی مار دیا گیا تھا۔

ہندوستان کی جانب سے حملے کا الزام بغیر کسی ثبوت کے پاکستان پر لگادیا گیا تھا اور کہا گیا تھا کہ حملہ آوروں کا تعلق مبینہ طور پر کالعدم جیش محمد سے تھا جو پاکستان سے داخل ہوئے۔

تاہم پاکستان نے بغیر کسی شواہد کے لگائے گئے اس الزام کو سختی سے مسترد کردیا تھا۔

ہندوستانی فوجی کیمپ پر ہونے والے حملے اور اس کے بعد ہندوستان کے پاکستان پر دہشت گردی سے متعلق الزامات سے دونوں ملکوں کے درمیان حالات کشیدہ ہیں۔

یہ حملہ ایک ایسے وقت میں ہوا ہے جب پاکستان پہلے ہی کشمیر میں گذشتہ 3 ماہ سے جاری ہندوستانی فورسز کے مظالم اور وہاں ہونے والی جھڑپوں پر اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں آواز بلند کرنے جارہا تھا، جہاں 8 جولائی کو حریت کمانڈر برہان مظفر وانی کی ہلاکت کے بعد سے حالات کشیدہ ہیں۔

اُڑی حملے کے بعد 29 ستمبر کو بھارت نے دعویٰ کیا تھا کہ اس نے کنٹرول لائن کے اطراف پاکستانی علاقے میں دہشت گردوں کے لانچ پیڈز پر سرجیکل اسٹرائیکس کیں جس کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان کشیدگی عروج پر پہنچ گئی تھی۔

پاکستان نے ہندوستان کی جانب سے سرجیکل اسٹرائیکس کے دعوے کو یکسر مسترد کرتے ہوئے کہا تھا کہ یہ کنٹرول لائن پر سیز فائر کی خلاف ورزی کا واقعہ تھا جس کے نتیجے میں اس کے دو فوجی جاں بحق ہوئے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری