تحریک انصاف نے ملکی قرضوں پر حقائق نامہ جاری کر دیا

خبر کا کوڈ: 1253838 خدمت: پاکستان
تحریک انصاف

تحریک انصاف نے قرضوں سے متعلق حقائق نامہ جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ کشکول توڑنے والوں نے ملکی قرضہ 22000 ارب تک پہنچا دیا ہے، جس میں ملکی قرضے 15 ہزار ارب جبکہ بیرونی قرضے 7 ہزار ارب سے زائد ہیں۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق، پنجاب پبلک سیکرٹریٹ میں تسنیم نیوز سے بات چیت کرتے ہوئے قائد حزب اختلاف پنجاب میاں محمود الر شید نے اسٹیٹ بنک آف پاکستان کی رپورٹ کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ ملکی و غیر ملکی قرضوں میں تشویش ناک حد تک اضافہ ہو گیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ (ن) لیگ کی موجودہ حکومت نے 8000 ارب روپے کا قرض لیا ہے جس کے بعد مجموعی طور پر قرضوں کا حجم 22000 ارب سے تجاوز کر گیا ہے۔ (ن) لیگ کے موجودہ دور حکومت کے دوران ملکی قرضوں میں 5 ہزار ارب سے زائد جبکہ غیر ملکی قرضوں میں اڑھائی ہزار ارب روپے سے زائد کا اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ستمبر2016 تک مقامی قرضوں کا بوجھ 15 ہزار ارب ہو گیا جس میں قلیل المدت قرضوں کا حجم 6 ہزار 482 ارب جبکہ طویل المدت قرضے 7 ہزار 900 ارب روپے تک پہنچ چکا ہے، جون2016 تک غیر ملکی قرضوں کا بوجھ 7 ہزار 200 ارب روپے سے بڑھ گیا جس میں سرکاری قرضوں کا حجم 6 ہزار 200 ارب روپے ہو گیا۔

سرکاری دستاویز ات کا حوالہ دیتے ہوئے میاں محمود الرشید نے کہا کہ تین سال قبل ملک پر مجموعی قرضوں کا بوجھ 14 ہزار 318 ارب تھا جس میں ملکی قرضوں کا حجم 9 ہزار 522 ارب اور غیر ملکی قرضے 4 ہزار 800 ارب روپے تھے۔

انہوں نے مزید کہا کہ دعویٰ کشکول توڑنے کا کرنے والوں نے بچہ بچہ مقروض کر دیا ملک کی ہر شے کو گروی رکھ کر ملک کو ”قرضستان“ بنا دیا ہے۔

میاں محمود الرشید نے کہا کہ حکومت ملک و قوم پر رحم کھائے اور قوم کے ٹیکس چوری کے پیسے سے قائم آف شور کمپنیاں بیچ کر ملکی قرضہ ادا کریں۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری