امرتسر میں ہارٹ آف ایشیا کانفرنس سے بھارتی وزیراعظم کا خطاب؛

چاہ بہار بندرگاہ سے افغانستان کو فائدہ پہنچے گا/ دہشتگردوں اور ان کے آقاؤں سے نمٹنا ہوگا

خبر کا کوڈ: 1257636 خدمت: دنیا
مودی

بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے بھارت، افغانستان اور ایران کے تعاون سے بننے والے چاہ بہار بندرگاہ سمیت دہشتگردی سے نمٹنے پر تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ دہشت گردی افغانستان سمیت پورے خطے کے امن کیلئے خطرہ ہے، ہمیں دہشت گردوں اور ان کے آقاؤں سے نمٹنا ہوگا، دہشت گردوں کے سہولت کاروں کیخلاف بھی کارروائی ناگزیر ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق، امرتسر میں ہارٹ آف ایشیا کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے بھارتی وزیراعظم نے کہا کہ افغانستان اور خطے کے دیگر ملکوں میں مضبوط رابطوں کے لیے کام کرنے کی ضرورت ہے، عالمی برادری افغانستان میں دیر پا امن اور استحکام کا عزم نو کرتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کا نیٹ ورک توڑنے کے لیے بھرپور عزم کی ضرورت ہے، دہشت گردی سے خطے کے امن اور استحکام کو خطرہ ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ہمار ی توجہ افغانستان اور اس کے شہریوں کو محفوظ بنانے پر ہے، افغانستان اور بھار ت میں ٹرانسپورٹ کا فضائی کوریڈور زیر غور ہے۔

انہوں نے کہاکہ ہمارا آج یہاں جمع ہونا افغانستان میں دیرپا امن اور سیاسی استحکام کے عزم کا اعادہ کرتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ چیلنجز بہت بڑے ہیں لیکن ہم ان سے نبرد آزما ہونے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

نریندر مودی نے کہا کہ دہشت گردی افغانستان اور خطے کے امن کے لیے خطرہ ہے، ہمیں دہشت گردوں اور ان کے آقاؤں سے نمٹنا ہوگا۔ ہمیں دہشت گرد نیٹ ورک کے خلاف سخت اور مشترکہ عزم کا اظہار کرنا ہوگا جو قتل و غارت اور خوف پھیلانے میں مصروف ہے۔

اپنے خطاب میں انہوں نے بھارت، افغانستان اور ایران کے تعاون سے بننے والے چاہ بہار بندرگاہ کا بھی ذکر کیا اور کہا کہ اس سے افغانستان کو فائدہ پہنچے گا اور اس کی معیشت کو دنیا کے دیگر حصوں سے جوڑ دے گا۔

انہوں نے کہا کہ افغانستان سے تجارت کا فضائی روٹ بنانے کی خواہش ہے، تجارت ایک ارب ڈالر تک بڑھائیں گے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری