وزیر اعلیٰ پنجاب کی ترکش میڈیا سے گفتگو؛

ترکی کے دوست ہمارے دوست اور ترکی کے دشمن ہمارے دشمن ہیں

خبر کا کوڈ: 1257800 خدمت: پاکستان
شہباز شریف

وزیر اعلیٰ پنجاب نے کہا ہے کہ ترکی اور پاکستان یک جان دو قالب دوست ممالک ہیں، ترک صدر واحدعالمی لیڈر ہیں جنہوں نے پاکستان کی پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے تیسری بار خطاب کیا ہے، ترک صدر نے مسئلہ کشمیر پر کھل کر بات کرنے سے پاکستانیوں کے دل جیت لئے ہیں۔

خبر رساں ادارے تسنیم  کے مطابق، وزیراعلیٰ شہبازشریف نے ترکی کے شہر قیصری میں ترکش میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ پنجاب میں ترکی کی کمپنیوں کی سرمایہ کاری نے دونوں ملکوں کو قریب لانے میں اہم کردار ادا کیا ہے جس پر ہم ترکی کے شکرگزار ہیں۔

شباز شریف کا کہنا تھا کہ  پاکستان اور ترکی میں انتہائی قریبی روابط ہیں لیکن ابھی ہمیں تجارتی اور معاشی تعاون بڑھانے کیلئے بہت کچھ کرنا ہے اور دونوں ملکوں کو اس ضمن میں تیزی سے اقدامات کرنے ہیں، ترکی کے دوست ہمارے دوست ہیں اور ترکی کے دشمن ہمارے دشمن ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ کشمیر کا مسئلہ خطے کا مسئلہ ہے اور کشمیری عوام اپنی آزادی کی جنگ خود لڑ رہے ہیں، بھارت نہتے کشمیری عوام کا بے دریغ خون بہا رہا ہے لیکن کشمیری عوام کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی، بھارت کو بین الاقوامی معاہدوں کی پابندی کرنی چاہیے۔

ایک اور سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ ترکی مسئلہ کشمیر کے حل میں کردار ادا کرے تو ہم خوش آمدید کہیں گے۔

وزیراعلیٰ نے کہا کہ مسئلہ کشمیر پر ترکی کے صدر طیب رجب اردگان کی طرف سے پاکستان کی حمایت کرنے پر شکرگزار ہیں ۔

ایک سوال کے جواب میں وزیراعلیٰ نے کہا کہ میں سمجھتا ہوں کہ ترکی میں ناکام بغاوت ترکی کی جنگ آزادی کے بعدا ہم ترین واقعہ ہے اور اس واقعہ کے بعد ترکی میں جمہوریت مزید مضبوط ہوئی ہے اور ترکی کی مضبوط معیشت کو تقویت ملی ہے جبکہ ترک صدر رجب طیب اردگان کے حیثیت میں عالمی سطح پر اضافہ ہوا ہے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری