پاکستان کو سیکولر ریاست بنانے کی سازش ناکام بنادیں گے، ملی یکجہتی کونسل

خبر کا کوڈ: 1268620 خدمت: پاکستان
پرچم پاکستان

ملی یکجہتی کونسل پنجاب کے زیر اہتمام سندھ میں شراب کی فروخت کی اجازت دینے اور کم عمری میں قبول اسلام پر پابندی کے خلاف 18دسمبر کو لاہور میں ملی یکجہتی کونسل کے زیر اہتمام مسجد شہدا مال روڈ پر عظیم الشان احتجاجی مظاہرے اور جلسہ عام کی تیاریوں کو حتمی شکل دے دی گئی ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق، گزشتہ روز منصورہ میں ملی یکجہتی کونسل پنجاب کے صدر وامیر جماعت اسلامی پنجاب میاں مقصود احمدکی زیر صدارت ایک اہم اجلاس منعقد ہوا۔

اجلاس میں علی عمران شاہین، انور گوندل، ظفر اقبال، قاری عطاالرحمان، محمد فاروق چوہان، عبدالعزیز عابد، نوید زبیری اور دیگر نے شرکت کی۔

اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے میاں مقصود احمد نے کہا کہ ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت پاکستان کو سیکولر ریاست بنانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ نام نہاد لبرل اور مادر پدر آزاد طبقہ اسلامی جمہوریہ پاکستان کے دینی تشخص کو تباہ کرنا چاہتا ہے لیکن پاکستان کے 20کروڑ عوام لبرل طبقے کے ان مذموم اور ناپاک عزائم کو کامیاب نہیں ہونے دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اسلام کے نام پر معرض وجود میں آیاتھا اور لاکھوں مسلمانوں نے قربانیاں دے کر یہ عظیم وطن حاصل کیا تھا۔ امریکہ اور یورپی ممالک چاہتے ہیں کہ پاکستان میں مغربی کلچر فروغ پائے اور ہمارا فیملی سسٹم ٹوٹ پھوٹ کاشکارہوجائے۔ پاکستان کی دینی و سیاسی جماعتیں مغربی ایجنڈے کو کسی بھی صورت قبول نہیں کریں گے۔

انہوں نے کہا کہ ملی یکجہتی کونسل کو پنجاب سمیت پورے ملک میں فعال اور متحرک کیا جائے گا تاکہ فرقہ واریت کا ملک سے خاتمہ کیا جاسکے۔

ملی یکجہتی کونسل کے پلیٹ فارم سے پنجاب کے اندر اتحاد و یکجہتی کی فضا کو پیدا کیا جائے گا۔ دین اسلام اخوت و محبت اور بھائی چارے کا درس دیتا ہے۔ انشااللہ ملی یکجہتی کونسل پاکستان میں دین اسلام کی سربلندی اور فرقہ واریت کے خاتمے کے لیے اپنا کردار اداکرے گی۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری