مسعوداظہر پر پابندی؛ چین نے بھارتی درخواست پھر ویٹو کردی

خبر کا کوڈ: 1282972 خدمت: پاکستان
مسعود اظهر

عوامی جمہوریہ چین جہاں بھارت کی نیوکلیئر سپلائر گروپ میں شمولیت میں رکاوٹ بنا ہوا ہے وہیں جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کو دہشتگرد قرار دینے کی بھارتی قرارداد کو بھی ویٹو کرچکا ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق، چین نے اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل میں مولانا مسعود اظہر کو دہشت گرد قرار دینے کی بھارتی قرارداد روک دی ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق بھارت جیش محمد کے سربراہ مولانا مسعود اظہر کو عالمی سطح پر دہشت گرد قرار دینے کے لیے اقوام متحدہ میں کئی بار قرارداد لاچکا ہے اور ہر بار اسے چین کی جانب سے مزاحمت کا سامنا کرنا پڑا، چین نے کئی بار بھارتی قرارداد کو تکنیکی بنیادوں پر ویٹو کیا اور اس بار مولانا مسعود سے متعلق قرارداد کو مسترد کردیا ہے۔

دوسری جانب بھارت وزارت خارجہ کے ترجمان وکاس سوروپ کا کہنا تھا کہ بھارت نے 9 ماہ قبل مسعود اظہر کو دہشت گرد قراردینے کے لیے قراداد پیش کی جس پر سیکیورٹی کونسل کے تمام ارکان کی جانب سے حمایت ملی تاہم چین نے اس قرارداد کو اپریل سے روکے رکھا اور اب اسے مسترد کردیا ہے۔

مولانا مسعود اظہر کو دہشت گرد قرار دلوانے میں بھارت کو امریکا، برطانیہ اور فرانس کی حمایت حاصل ہے تاہم چین کی جانب سے قرارداد کو ہمیشہ ویٹو کیا گیا جب کہ تکنیکی رکاوٹ ختم کرنے کے لیے بھارت نے چین سے کئی بار مذاکرات بھی کیے مگر وہ کامیاب نہ ہوسکے اور بھارت کی نیوکلیئر سپلائر گروپ میں شمولیت میں بھی چین رکاوٹ بنا ہوا ہے۔

بھارت جیش محمد کے سربراہ مسعود اظہر کو پٹھان کوٹ ایئر بیس پر حملے سمیت مقبوضہ کشمیر میں ہونے والی کارروائیوں کا ذمہ دار قرار دیتا ہے جب کہ پاکستان پر جیش محمد کی حمایت کرنے کا الزام بھی عائد کرتا ہے تاہم پاکستان نے ہمیشہ بھارتی الزام کو مسترد کیا ہے۔

    تازہ ترین خبریں