صوبائی سیکرٹری ایم ڈبلیو ایم:

عوام سے اسلحہ جمع کرنے والے دہشتگردوں کو قابو کرنے میں ناکام/ سیکورٹی کی ذمہ داری طوری اور کرم ملیشیا کے حوالے کی جائے

خبر کا کوڈ: 1303208 خدمت: پاکستان
سیکرٹیری جنرل علامہ محمد اقبال بہشتی

ایم ڈبلیو ایم کے صوبائی سیکرٹری جنرل نے سانحہ پاراچنار کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ سانحہ مقامی انتظامیہ کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت ہے۔ پاراچنار کے محب وطن عوام سے اسلحہ جمع کرنے والے دہشتگردوں کو قابو کرنے میں بری طرح ناکام ہوگئے ہیں جبکہ قوم کی خواہش ہے کہ علاقے کی سیکورٹی کی ذمہ داری طوری اور کرم ملیشیا کے حوالے کی جائے۔

تسنیم نیوز ایجنسی کے مطابق مجلس وحدت مسلمین خیبرپختونخوا کے سیکرٹری جنرل علامہ محمد اقبال بہشتی نے سانحہ پاراچنار کی شدید مذمت کرتے ہوئے اس واقعے کو مقامی انتظامیہ کی بدترین ناکامی قرار دیا ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ پاراچنار کے نہتے عوام سے اسلحہ جمع کرنے کی بات کرنے والے دہشت گردوں کو قابو کرنے میں بری طرح ناکام ہو گئے ہیں۔

انہوں نے دکھ بھرے انداز میں کہا کہ آج ہم ایک دفعہ پھر اپنے پیاروں کی لاشیں اٹھارہے ہیں۔

انہوں نے مطالبہ کیا کہ علاقے کی سیکورٹی کی ذمہ داری کرم طوری ملیشیا اور کرم ایجنسی کی محافظ کرم ملیشیا کے حوالے کی جائے۔

علامہ اقبال بہشتی نے شکوہ کیا کہ بدنام زمانہ دہشتگرد جماعت داعش علاقے میں بھرتیاں کر رہی ہے لیکن ملکی وقار و تحفظ کے ضامن ادارے خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔

انہوں نے نشاندہی کی کہ پارا چنار سے ملحقہ افغان علاقوں میں داعش سرگرم عمل ہیں۔ گزشتہ روز ننگرھار میں دہشت گردی کی گئی اور اب پاراچنار کو داعش نے اپنے مذموم ایجنڈے کا نشانہ بنایا۔

انہوں نے اپنی گفتگو میں مقرر مطالبہ کیا کہ پاراچنار سے ملحقہ بارڈر کی سیکورٹی طوری ملیشیا کے حوالے کی جائے یا اس بارڈر کو مکمل طور پر بند کر دیا جائے۔

    تازہ ترین خبریں