آستانہ اجلاس؛

ترکی کے ساتھ براہ راست مذاکرات کا کوئی امکان نہیں، جعفری

خبر کا کوڈ: 1304897 خدمت: دنیا
بشار جعفری

شام کے مذاکراتی وفد کے چیئرمین کا آستانہ اجلاس کے موقع پر کہنا تھا کہ ترکی کے ساتھ براہ راست مذاکرات کا کوئی امکان نظر نہیں آرہا ہے۔

تسنیم نیوز ایجنسی کے مطابق شام کے مذاکراتی وفد کے چیئرمین بشار جعفری کا کہنا ہے کہ قزاقستان کے دارالحکومت آستانہ میں منعقد ہونے والے اجلاس کا مقصد دہشت گرد عناصر خاص کر داعش اور النصرہ فرنٹ کو شامی اپوزیشن گروہوں سے الگ کرنا ہے۔

شامی مذاکرات کاروں کے چیئرمین نے تاکید کرتے ہوئے کہا: شامی حکومتی وفد کا ترک حکام کے ساتھ براہ راست آستانہ اجلاس کے بعد کسی قسم کے مذاکرات نہیں ہوں گے۔

واضح رہے کہ قزاقستان میں شام سے متعلق دو روزہ سہ فریقی ( ایران، روس اور ترکی) اجلاس جاری ہے۔

اجلاس کی میزبانی قزاقستان کررہا ہے جس میں شام میں امن و امان کی صورتحال، شامی قوم کے اتحاد، دہشت گردی کے خاتمے، شامی اپوزیشن کے ساتھ مذاکرات جیسے مسائل پر بحث کی جائے گی۔

 

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری