امریکہ کا بڑا کارنامہ؛ 5 سالہ ایرانی بچے کو کئی گھنٹے تک ہتھکڑیوں میں جکڑے رکھا

خبر کا کوڈ: 1315322 خدمت: ایران
پوستر/ مرگ بر دولت آمریکا

امریکہ کی ریاست ورجینیا میں انٹر نیشنل واشنگٹن ڈول سایر پورٹ پر پانچ سالہ ایرانی بچے کو کئی گھنٹے ہتھکڑیوں کے ساتھ حراست میں رکھا گیا۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق، امریکی پولیس نے  ایران اور امریکہ کی شہریت رکھنے والے ایک خاندان کو امریکہ میں داخلے کی اجازت نہ دیتے ہوئے ان کے  5 سالہ بچے کو کئی گھنٹے ہتھکڑیوں کے ساتھ حراست میں رکھا۔

واضح رہے کہ ایرانی شہریت بھی  رکھنے والی بچے کی ماں امریکہ کی ریاست میری لینڈ میں پیدا ہوئی ہے۔

کئی گھنٹے حراست میں رہنے کے بعد آزاد کیے جانے والے افراد  کا ایک دوسرے سے ملاپ  کا منظر انتہائی جذباتی تھا ۔

میری لینڈ کے سینٹر کرس وان ہولن اس موضوع کو ایجنڈے میں لائے ہیں۔

وائٹ ہاؤس میں  یومیہ پریس کانفرنس میں بھی اس موضوع پر سوالات کیے گیے۔ وائٹ ہاوس کے ترجمان سین سپائسر نے کہا کہ یہ نہیں کہا جا سکتا کہ کسی کی جنسیت یا عمر سے خطرہ لاحق نہیں ہو سکتا۔ 

انھوں نے اس نظریے کا دفاع کیا کہ ویزے کی پابندی کا فیصلہ صرف مسلمانوں کے لیے نہیں ہے بلکہ یہ ایک سخت حفاظتی طریقہ کار ہے۔

یاد رہے کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی طرف سےصدارت کا عہدہ سنھبالنے کے بعد عراق، شام، سوڈان، لیبیا، صومالیہ، یمن اور ایران کے شہریوں کی امریکہ میں داخلے پر پابندی کے فیصلے بعد جمعہ اور ہفتہ کے روز بے شمار افراد کو ہوائی اڈوں پر حراست میں لیا گیا تھا۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری