خطے میں بدامنی پھیلانے کا الزام لگانے پر ایران نے ترک سفیر کو طلب کر لیا

خبر کا کوڈ: 1334591 خدمت: ایران
ایران و ترکیه

ترک صدر رجب طیب اردگان اور ترک وزیر خارجہ میوت چاوش اوگلو کی جانب سے ایران پر خطے میں بد امنی کا الزام عائد کیے جانے کے بعد تہران نے ترک سفیر کو طلب کرلیا۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق ایران نے ترک سفیر کو طلب کرکے اردگان اور اوگلو کے بیانات پر اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا۔
 

اس موقع پر ایرانی دفتر خارجہ کے ترجمان بہرام قاسمی نے اپنا موقف واضح کرتے ہوئے کہا کہ ہم ترکی کی پوزیشن کو صبر سے دیکھیں گے لیکن ہمارے صبر کی بھی ایک حد ہے۔

یاد رہے کہ اتوار کے روز مختلف ملکوں سے آئے مندوبین سے میونخ میں گفتگو کرتے ہوئے ترک وزیر خارجہ نے کہا تھا کہ ایرانی حکومت شام اور عراق کو مکمل طور پر شیعہ ریاست بنانا چاہتی ہے۔

جبکہ ہم مشرق وسطیٰ میں کسی بھی قسم کی فرقہ پرستی کے خلاف ہیں اور خطے میں امن و استحکام کیلئے ایران سے بھی یہی پالیسی اختیار کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

ایران نے اس بیان پر شدید ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ترک سفیر کو طلب کیا اور اپنا احتجاج ریکارڈ کروایا۔

واضح رہے کہ شام کی لڑائی میں تہران شامی عوام کی جانب سالوں سے منتخب بشار اسد حکومت کی حمایت کر رہا ہے جبکہ انقرہ، حکومت مخالف باغی گروہوں کے ساتھ کھڑا ہے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری