خیبرپختونخوا میں بولی جانے والی 26 میں سے 15زبانیں معدوم ہونے کے خطرہ سے دوچار

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہا خیبرپختونخوا میں بولی جانے والی 26 زبانوں میں سے 15کو معدوم ہونے کا خطرہ لاحق ہے۔

خیبرپختونخوا میں بولی جانے والی 26 میں سے 15زبانیں معدوم ہونے کے خطرہ سے دوچار

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ خیبرپختونخوا میں بولی جانے والی 26 زبانوں میں سے 15 کو معدوم ہونے کا خطرہ لاحق ہے۔

نجی ٹی وی چینل کے مطابق اقوام متحدہ کے ادارہ برائے ورلڈ لینگویجز ان ڈینجر کا کہنا ہے کہ خیبر پختونخوا میں بولی جانے والی علاقائی زبانوں میں سے 15 زبانوں کے معدوم ہونے کا خطرہ لاحق ہے جن زبانوں میں سے 8 زبانیں چترال میں بولی جاتی ہیں۔

زبانوں کے ماہرین کے مطابق زبان کے معدوم ہونے سے نہ صرف وہ زبان مرتی ہے بلکہ اس زبان کے بولنے والوں کی ثقافت، روایات، موسیقی اور تاریخ بھی دم توڑ دیتی ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ حکومت کو چاہیے کہ وہ ان زبانوں کو معدوم ہونے سے بچانے کے لئے نا صرف قوائد و ضوابط مرتب کرے بلکہ مادری زبان میں تعلیم کے انتظامات بھی کرے۔

واضح رہے کہا علاقائی زبانوں کی ترقی کے لئے اے این پی حکومت کی جانب سے 2012 میں خیبرپختونخوا پروموشن آف ریجنل لنگویجز ایکٹ پاس کیا گیا تاہم اس حوالے سے باقاعدہ اتھارٹی کا قیام اب تک ممکن نہیں ہوسکا۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری