انصاراللہ یمن کے سعودی اتحاد کے ساتھ مذاکرات کیلئے شرائط

انصاراللہ یمن کے ترجمان نے سعودی اتحاد کے ساتھ کسی بھی قسم کے مذاکرات کو بعض امور کو عملی جامہ پہنانے سے مشروط کردیا۔

محمد عبدالسلام

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق انصاراللہ یمن کے ترجمان محمد عبدالسلام نے اس ملک کی اعلیٰ کونسل کے موقف پر ثابت قدم رہنے کی تاکید کرتے ہوئے سعودی اتحادی فوج کے ساتھ کسی بھی قسم کے مذاکرات کو جنگ کے مکمل طور پر خاتمے اور محاصرہ ختم کرنے سے مشروط کردیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمارا موقف وہی ہے جس پر مسقط میں سعودی تجاوز کے مکمل خاتمے اور اس کے ممکنہ مذاکرات پر اثرات سے متعلق اتفاق کیا گیا تھا۔

یمن کی اعلیٰ کونسل کے سربراہ صالح الصماد نے گزشتہ جمعہ کو تاکید کی تھی کہ مذاکرات کے حوالے سے کسی قسم کی پیشرفت سامنے نہیں آئی ہے جبکہ سیاسی اور جنگی ذرائع نے صورتحال کی مزید کشیدگی کی خبر دی ہے جس کا آغاز مغربی سواحل اور بعض محاذوں پر ہوگیا ہے۔

انہوں نے تاکید کی تھی کہ یمن کیلئے اقوام متحدہ کے سفیر اسماعیل ولد الشیخ کی حالیہ گفتگو سے سعودی حمایت عیاں ہوئی ہے۔

سعودی اتحاد نے دو سال قبل یمن کے مظلوم عوام کیخلاف جنگ کا آغاز کرتے ہوئے سابق یمنی صدر عبدربہ منصور ہادی کو واپس اقتدار میں لانے کی سرتوڑ کوششیں کیں تاہم ان کارروائیوں سے ریاض کو رسوائی اور یمن کے بےگناہ عوام کے قتل عام کے سوا کچھ نہیں ملا ہے۔   

واضح رہے کہ یمن بحران کے حل کیلئے ممکنہ مذاکرات بھی ہمیشہ سے سعودی اور اس کے حامی ممالک کی بدعھدی کی وجہ سے کامیاب نہیں ہوسکے ہیں۔

 

سب سے زیادہ دیکھی گئی اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری