علامہ راجہ ناصر عباس کا تفتان بارڈ پر زائرین کی حالت زار پر اظہار تشویش

خبر کا کوڈ: 1347077 خدمت: پاکستان
علامہ راجہ ناصر عباس

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے تفتان بارڈ پر زائرین کو درپیش مسائل پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس مسئلہ کے مستقل اور فوری حل کا مطالبہ کیا ہے۔

خبررساں دارے تسنیم کے مطابق، مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے تفتان بارڈ پر زائرین کو درپیش مسائل پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے اس مسئلہ کے مستقل اور فوری حل کا مطالبہ کیا ہے۔

انہوں نے کہ وفاقی وزارات داخلہ اور بلوچستان کی صوبائی حکومت کوئٹہ سے ایران بذریعہ سڑک سفر کرنے والے زائرین کی مشکلات سے بخوبی آگاہ ہے۔

اس معاملے سے حکومت کی دانستہ لاتعلقی اور غفلت زائرین کے اضطراب میں اضافے کا باعث ہے۔

تفتان میں رہائش اور کھانے کے نام پر لوٹ مار کرنے والوں کی اجاری دارہ قائم رکھنے کے لیے زائرین کو خود ساختہ مشکلات میں الجھایا جا رہا ہے جس پر پاکستان کے پانچ کروڑ اہل تشیع سراپا احتجاج ہیں۔

سیکورٹی کے نام پر زائرین کے قافلوں کو کئی کئی دن تفتان بارڈر پر روک لیا جاتا ہے، جس کے باعث بچوں، بزرگوں اور خواتین کو شدید اذیت جھیلنا پڑتی ہے۔

بارڈر پر دکاندار اشیا ئے خورد و نوش کئی گنا مہنگے نرخوں پر فروخت کرتے ہیں۔

مناسب رہائشی سہولیات نہ ہونے کے باعث خواتین و بچوں کو اکثر اوقات کھلے آسمان تلے کئی کئی دن اور راتیں گزارنی پڑتی ہیں۔

انہوں نے حکومت سے ایسی پالیسی تشکیل دینے کا مطالبہ کیا ہے جس کے تحت تفتان بارڈر پر زائرین کے قیام کو چند گھنٹوں تک محدود کیا جائے تاکہ انہیں تفتان بارڈر پر کم سے کم مشکلات کا سامنا کرنا پڑے۔

ان کا کہنا تھا کہ زیارت امام رضا علیہ السلام سے واپس آنے والے زائرین کے تفتان سے کوئٹہ تک محفوظ سفری سہولیات کی فراہمی ریاست کی ذمہ داری ہے۔

واضح رہے یہ پہلی بار نہیں ہے کہ راجہ ناصر عباس جعفری نے تفتان بارڈ پر زائرین کو درپیش مسائل کے خلاف آواز اٹھائی ہے۔

اس سے قبل بھی کئی بار وہ حکومت سے ان مسائل کو حل کرنے کا مطالبہ کر چکے ہیں۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری