داعش کا شامیوں کو افغان لباس پہننے کا حکم

خبر کا کوڈ: 1348607 خدمت: دنیا
داعش

شدت پسند دہشتگرد تنظیم داعش نے شام میں اپنے زیر تسلط علاقے رقہ میں مردوں پر افغان لباس پہننے کا حکم دیا ہے۔

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق، داعش نے شام کے عام شہریوں کو افغانی لباس پہننا اس لئے لازمی قرار دیا ہے تا کہ حلیے کی وجہ سے شام کی عام آبادی اور ان کے جنگجوں آپس میں گھل مل جائیں اور ان کی شناخت ممکن نہ ہوسکے۔

رقہ کو خاموشی سے ذبح کیا جارہا ہے، نامی گروپ سے منسلک سماجی کارکن ابو محمد نے انکشاف کیا ہے کہ داعش نے گزشتہ ماہ سے علاقے میں افغان طرز کا لباس پہننے کا حکم نافذ کر رکھا ہے۔

ذرائع کے مطابق، ان نئی پابندیاں داعش کے رقہ کے قریبی علاقے میں لگائی گئی ہیں جہاں امریکی اتحاد نے داعش کے خلاف فضائی حملے شروع کر رکھے ہیں۔

سماجی کارکن ابو محمد نے مزید بتایا کہ نیا حکم فضائی حملے کرنے والوں اور کرد فوج کے لیے مشکلات پیدا کرنے جبکہ داعش اور عام افراد میں فرق ختم کرنے کے لیے ہے۔

ابو محمد کا کہنا تھا کہ رقہ میں داعش کی جانب سے نئی پابندیاں عائد کیا جانا خطرہ ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ علاقے میں پانی اور بجلی نہیں ہے، جب کہ اشیا خورد و نوش اور عام اتعمال کی چیزوں کی قیمتیں کئی گنا بڑھ گئی ہیں۔

ادھر شام میں جاری جنگ کی پر نظر رکھنے والے برطانوی بیسڈ شام کی آبزرویٹری فار ہیومن رائٹس نے بھی داعش کے نئے احکامات کی تصدیق کی۔

آبزرویٹری کے ڈائریکٹر رمی عبدالرحمٰن کے مطابق داعش نے رہائشیوں پر افغان طرز کے لباس پہننے کا نفاذ اس لیے کیا تاکہ امریکی اتحادی فوج کو اطلاع دینے والے مخبر عام شہریوں اور داعش کے جنگجوؤں میں فرق نہ پہچان سکیں۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری