فلسطین میں اسرائیلی مظالم اور کشمیر میں بھارتی مظالم پر خاموشی اسلام سے خیانت کے مترادف

خبر کا کوڈ: 1351604 خدمت: اسلامی بیداری
کشمیر و فلسطین

فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل نے اس بیان کے ساتھ کہ امریکا، اسرائیل اور ہندوستان پاکستان کو غیر مستحکم کرنا چاہتے ہیں، کہا کہ فلسطین میں اسرائیلی مظالم اور کشمیر میں بھارتی مظالم پر خاموشی اسلام سے خیانت کے مترادف ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کو ملی یکجہتی کونسل پاکستان کی سپریم کونسل میں شامل کر لیا گیاہے۔

اس بات کا اعلان ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے مرکزی صدر صاحبزادہ ابوالخیر محمد ذبیر نے مقامی ہوٹل میں منعقدہ سپریم کونسل کے مرکزی سربراہی اجلاس میں کیا۔

ان کاکہنا تھا کہ ملک میں دہشت گردی کے خاتمہ کے لئے جاری آپریشن ردالفساد کی بھرپور حمایت کرتے ہیں اور اس آپریشن کو دہشت گردی کے خاتمہ تک جاری رہنا چاہئیے۔

انہوں نے ملک گیر بلاامتیاز رد الفساد آپریشن کا مطالبہ بھی کیا۔

ملی یکجہتی کونسل پاکستان کی سپریم کونسل کے اجلاس میں فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل صابر ابو مریم نے خصوصی طور پر شرکت کی اور فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کو ملی یکجہتی کونسل میں شامل کئے جانے کے اعلان کا خیر مقدم کرتے ہوئے ملی یکجہتی کونسل کی مجلس قائدین کا شکریہ ادا کیا۔

فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل صابر ابو مریم نے ملی یکجہتی کونسل کے قائدین کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ مظلوم فلسطینیوں سے اظہار یکجہتی کے عنوان سے 30 مارچ کو عالمی یوم الارض الفلسطین اور 15 مئی کو یوم نکبہ کے عنوان سے پروگرام منعقد کیے جائیں جس کی میزبانی فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کرے گی تاہم ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے سیکرٹری جنرل نے فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کی جانب سے تجویز کا خیر مقدم کیا اور کہا کہ فلسطین مسلم اْمّہ کی اولین ذمہ داری ہے جس سے لمحہ بھر بھی کوتاہی نہیں کی جا سکتی۔

ابو مریم کا کہنا تھا کہ امریکا، اسرائیل اور ہندوستان پاکستان کو غیر مستحکم کرنا چاہتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ فلسطین میں اسرائیلی مظالم اور کشمیر میں بھارتی مظالم پر خاموشی اسلام سے خیانت کے مترادف ہے۔

فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل نے کہا کہ فلسطین عالم اسلام کے مسائل میں سب سے اہم مسئلہ ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کے علماء و مشائخ مسئلہ فلسطین کو اجاگر کرنے میں اپنا کردار ادا کریں۔

ملی یکجہتی کونسل پاکستان کی سپریم کونسل کے اجلاس میں ملی یکجہتی کونسل پاکستان اور جمعیت علماء پاکستان کے مرکزی صدر صاحبزادہ ابوالخیر ذبیر، جماعت اسلامی پاکستان کے امیر سراج الحق، ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ، سینیئر نائب صدر و سربراہ اسلامی تحریک پاکستان علامہ ساجد علی نقوی، ملی یکجہتی کونسل پاکستان کے مرکزی رہنما اور البصیرہ کے چیئر مین ثاقب اکبر، مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل علامہ ناصر عباس جعفری، پاکستان عوامی تحریک کے خرم نواز گنڈا پور، جماعۃ الدعوۃ کے حافظ عبد الرحمان مکی، معروف مذہبی اسکالر ضیاء اللہ شاہ بخاری، حافظ عاکف سعید، تحریک جوانان پاکستان کے چیئر مین عبد اللہ گل، جمعیت اہل حدیث کے عبد الغفار روپڑی، حافظ ابتسام الہی ظہیر، قاری یعقوب شیخ، ڈاکٹر احمد علی سراج، مولانا شبیر میثمی، اللہ وسایا، علامہ عارف واحدی، اسد اللہ بھٹو، آصف لقمان قاضی، نثار ترمذی، لعل مہدی، پیر عظمت اللہ سمیت علامہ رمضان توقیر،سید ہارون علی گیلانی، پیر معین الدین کوریجہ، پروفیسر محمد ابراہیم، سلطان احمد علی، نذیر احمد جنجوعہ، پیر غلام رسول اویسی، مفتی گلزار احمد نعیمی، قاری شیخ یعقوب، ڈاکٹر محمد نجفی اور متعدد علمائے کرام و مشائخ شریک تھے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری