مردم شماری کے بعد کروڑوں افغان مہاجرین کا پاکستانی شہری بننے کا اندیشہ

خبر کا کوڈ: 1354981 خدمت: پاکستان
فیصل رضا عابدی

پاکستان پیپلز پارٹی کے سابق رہنما سید فیصل رضا عابدی نے دعویٰ کیا ہے کہ سندھ میں افغان مہاجرین کی تعداد چار کروڑ سے بڑھ چکی ہے جس کی وجہ سے نہ صرف یہ مردم شماری میں بطور پاکستانی شہری شامل ہو جائیں گے بلکہ ووٹ بھی ڈالیں گے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے سابق رہنما سید فیصل رضا عابدی نے دعویٰ کیا ہے کہ سندھ میں افغان مہاجرین کی تعداد چار کروڑ سے بڑھ چکی ہے۔

جبکہ صرف کراچی میں یہ تعداد ڈیڑھ کروڑ سے زیادہ ہیں جس کی وجہ سے نہ صرف یہ مردم شماری میں بطور پاکستانی شہری شامل ہو جائیں گے بلکہ ووٹ بھی ڈالیں گے۔

فیصل رضا عابدی  نے دعوی کیا ہے کہ پیپلز پارٹی کے عہدیداران انہیں شناختی کارڈ بنا کر دے رہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ضیا الحق کے زمانے میں پاکستان میں 40 لاکھ افغان مہاجرین آئے۔

چونکہ افغانوں کی شرح پیدائش ہمارے مقابلے میں کئی گنا زیادہ ہے اور اس حساب سے پورے پاکستان میں ان کی آبادی 4 سے ساڑھے 4 کروڑ تک پہنچ چکی ہے جن میں سے 65 سے 70 لاکھ بلوچستان میں مقیم ہے۔

انہوں نے کہا کہ چار کروڑ افغانی خیبر پختونخوا اور پنجاب سے بھاگ کر سندھ میں داخل ہوچکے ہیں جن میں سے ڈیڑھ کروڑ صرف کراچی میں موجود ہیں جن کے پاس پاکستان کے قومی شناختی کارڈ بھی ہیں۔

یہ لوگ خیبر پختونخوا سے اس لیے بھاگے کیونکہ پٹھان انہیں پہچان لیتے ہیں لیکن ہم لوگ اس وجہ سے نہیں پہچان پاتے کیونکہ یہ پشتو بولتے ہیں اور ہم انہیں افغانی کی بجائے پٹھان کے طور پر شناخت کرتے ہیں۔

خیبر پختونخوا اور پنجاب سے سندھ کی طرف ہونے والی ٹرانسپورٹیشن کا ریکارڈ اٹھا کر دیکھا جائے تو اندازہ ہو جائے گا کہ کتنی بڑی تعداد میں سندھ میں افغانی داخل ہو چکے ہیں۔

انہوں نے معروف صوفی بزرگ شاہ عبداللطیف بھٹائی ؒ کی کتاب میں موجود سینکڑوں سال پہلے کی پیشن گوئی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ سندھ کو کسی سے خطرہ نہیں ہے، انہیں صرف قندھاری یعنی افغانیوں سے خطرہ ہے۔

فیصل رضا عابدی کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی کے عہدیداران تکفیری ذہن کے مالک ہیں جو افغانوں کو ویلکم کر رہے ہیں۔

پی پی والوں نے انہیں قومی شناختی کارڈ جاری کیے ہیں جبکہ آج بھی کراچی کے ضلع غربی میں افغانوں کے کیمپوں میں درجنوں کی تعداد میں نادرا کی گاڑیاں موجود ہیں جو انہیں دھڑا دھڑ شناختی کارڈ بنا کر دے رہی ہیں۔

فیصل رضا عابدی نے کہا کہ عوام کسی غلط فہمی میں نہ رہے ، مردم شماری پاک فوج نہیں بلکہ سول انتظامیہ کرا رہی ہے۔

پاک فوج کی ذمہ داری صرف سیکیورٹی کی حد تک ہے۔

مردم شماری بھی انہی لوگوں نے کرنی ہے جو افغانوں کو شناختی کارڈ بنا کر دے رہے ہیں۔

مردم شماری کے بعد افغانی نہ صرف پاکستانی شہری کے طور پر شناخت ہوں گے بلکہ ووٹ کا حق بھی حاصل کرلیں گے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری