دفاع فلسطین ہی دفاع پاکستان ہے

دفاع فلسطین ہی دفاع پاکستان ہے

فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان نے "یوم ارض فلسطین" کی مناسبت سے ملک بھر میں مہم چلانے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ تئیس (23) مارچ انیس سو چالیس کو قرارداد پاکستان صرف پاکستان کے قیام کے لئے ہی نہیں بلکہ مظلوم فلسطینیوں کے دفاع کے لئے بھی ایک قرارداد قائد اعظم نے پیش کی تھی جس سے واضح ہوتا ہے کہ دفاع فلسطین ہی دفاع پاکستان ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان نے "یوم ارض فلسطین" کی مناسبت سے ملک بھر میں مہم چلانے کا اعلان کیا ہے، اس عنوان سے فلسطینی ارض مقدس کے دن کی مناسبت سے چھبیس مارچ کو اسکاؤٹس ہیڈ کوارٹر کراچی میں گلاب کے پودے لگا کر جہاں ارض فلسطین سے یکجہتی کا اظہار کیا جائے گا وہاں دنیا بھر میں اور بالخصوص ارض مقدس فلسطین میں صیہونی مظالم کے خاتمہ کی دعا بھی کی جائے گی، جبکہ تیس مارچ کو آرٹس کونسل کراچی میں فلسطین کانفرنس کا انعقاد کیا جائے گا جس میں پاکستان کی تمام سیاسی و مذہبی جماعتوں کے رہنماؤں سمیت انسانی حقو ق کے لئے سرگرم عمل تنظیموں کے اراکین اور سول سوسائٹی کے نمائندے شریک ہوں گے۔

ان خیالات کا اظہار فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی سرپرست کمیٹی کے اراکین بشمول سابق رکن قومی اسمبلی و رہنما جماعت اسلامی مظفر احمد ہاشمی، پاکستان مسلم لیگ نواز کے رہنما ازہر علی ہمدانی، عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما یونس بونیری، پاکستان تحریک انصاف کے رہنما اسرار عباسی، نظام مصطفی پارٹی کے مرکزی رہنما الحاج محمد رفیع، ایمیٹی انٹرنیشنل پاکستان کے صدر محفوظ یارخان ایڈوکیٹ اور فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے مرکزی سیکرٹری جنرل صابر ابو مریم نے کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

ان کاکہنا تھا کہ تئیس (23) مارچ انیس سو چالیس کو قرارداد پاکستان صرف پاکستان کے قیام کے لئے ہی نہیں بلکہ مظلوم فلسطینیوں کے دفاع کے لئے بھی ایک قرار داد قائد اعظم نے پیش کی تھی جس سے واضح ہوتا ہے کہ دفاع فلسطین ہی دفاع پاکستان ہے۔

فلسطین فاؤنڈیشن پاکستان کے رہنماؤں کا کہنا تھا کہ مسئلہ فلسطین دنیائے اسلام و انسانیت کا اولین اور بنیادی مسئلہ ہے، تاہم ہر طبقہ ہائے فکر سے تعلق رکھنے والوں کی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ اس مسئلہ کو فراموش نہ ہونے دیں۔

انہوں نے کہا کہ آج امریکی دباؤ میں کچھ عرب مسلمان ریاستیں غاصب اسرائیل کے ساتھ تعلقات استوار کر کے مظلوم فلسطینیوں کی ستر سالہ جدوجہد کو نابود کرنے کی سازشیں کر رہے ہیں جسے کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ فلسطین میں اسرائیلی بربریت اور مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی بربریت ایک ہی سکہ کے دو رخ ہیں جس کا مقصد جہاں مسلم دنیاکو کمزور کرنا ہے وہاں ساتھ ہی ساتھ پاکستان کو بھی غیر مستحکم کرنا ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان ترقی کی راہ پر گامزن ہے اور اسرائیلی و بھارتی گٹھ جوڑ میں پنپنے والی سازشوں کا ہر سطح پر منہ توڑ جواب دینے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری