جنرل سیکرٹری ایم ڈبلیو ایم:

امریکی ایماء پر بننے والے سعودی اتحاد کے نتائج افغان جنگ سے بدتر ہونگے

خبر کا کوڈ: 1373540 خدمت: پاکستان
علامہ راجہ ناصر عباس

مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ نے قومی مرکز خواجگان میں کارکنان و عمائدین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مشرقی وسطیٰ کے پراکسی وار کا حصہ بننے سے قبل سو بار سوچا جائے کہ ہم ابھی تک افغان جنگ کی قیمت چکا رہے ہیں۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے قومی مرکز خواجگان میں کارکنان و عمائدین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ریاست کے فیصلے پارلیمنٹ میں ہوتے ہیں تاہم یہاں فرد واحد بادشاہت طرز کے فیصلے کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ امریکی ایماء پر بننے والے اتحاد کے نتائج افغان جنگ سے بدتر ہونگے۔

انہوں نے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بانیان پاکستان کی اولادوں نے جب بھی پاکستان دشمن پالیسیوں پر تنقید کی ان کو ایران کے ساتھ نتھی کرکے ایک پروپیگنڈا شروع کیا جاتا ہے۔

انہوں نے واضح کیا کہ ہم پاکستانی ہیں اور بانیان پاکستان کے اولادوں میں سے ہیں، ہمیں پاکستان کی سلامتی و استحکام سب سے زیادہ عزیز ہے۔ ملکی تاریخ اس بات کی گواہ ہے کہ ہم نے ہمیشہ ملک کی نظریاتی و جغرافیائی سرحدوں کی حفاظت کے لئے اپنی جان مال کی قربانی دی ہے اور ہم یہ اعلان کرتے ہیں کہ انشااللہ وقت آنے پر اس ملک کی بقا و سلامتی کے لئے کسی بھی قربانی سے دریغ نہیں کرینگے۔

مشرقی وسطیٰ میں امریکہ و اسرائیل اور اس کے اتحاد بری طرح ناکام ہوچکے ہیں وہ مسلمانوں کو تقسیم کرکے اپنی شکست کا بدلہ لینا چاہتا ہے، ایسے میں پاکستان جیسے عظیم اسلامی ایٹمی طاقت ملک کو کسی ایسے سازش کا حصہ نہیں بننا چاہیئے جو مسلم امہ میں انتشار کا سبب بنے۔

انہوں نے کہا کہ ہم ابھی تک افغان جنگ کے قرض اتار رہے ہیں۔

 پاکستان کے80 ہزار عوام کی قربانیوں کے باوجود ابھی تک ہم اس ناسور دہشتگردوں سے جان نہیں چھڑوا سکے، پاکستان کے سیاسی مذہبی جماعتوں کے قائدین ہوش کے ناخن لیں اور ملک کو مشرق وسطیٰ کے دلدل میں دھکیلنے والوں کا راستہ روکیں۔

ان خیالات کا اظہار مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے سربراہ علامہ راجہ ناصر عباس جعفری نے قومی مرکز خواجگان میں کارکنان و عمائدین سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری