ٹیکنالوجی کی دنیا میں تیسری پوزیشن حاصل کرنے کے بعد؛

پاکستان؛ جنوبی ایشیا کا 5 جی سروس کا تجربہ کرنے والا پہلا ملک

خبر کا کوڈ: 1377032 خدمت: پاکستان
Anusha Rehman IT

وزیر مملکت برائے انفارمیشن ٹیکنالوجی کا کہنا ہے کہ پاکستان نے حال ہی میں جی ایس ایم اے ایوارڈ جیتا ہے اور موبائل ٹیلی کام آپریٹرز کی فہرست میں تیسری پوزیشن حاصل کرنے کے بعد پاکستان جنوبی ایشیاء کا وہ پہلا ملک ہوگا جو تیز ترین انٹرنیٹ رابطہ فراہم کرنے کے لیے ففتھ جنریشن (5 جی) سروسز کا تجربہ کرے گا۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (آر سی سی آئی) کی جانب سے منعقدہ انفارمیشن کمیونیکیشن ٹیکنالوجی کی اعزازی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انوشہ رحمٰن کا کہنا تھا کہ حکومت 2030 تک ہر گاؤں میں 100 صارفین کے لیے ایک موبائل ٹاور فراہم کرنے کے منصوبے پر کام کررہی ہے۔

پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی کے چیئرمین اسماعیل شاہ، راولپنڈی چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری کے صدر راجا عامر اقبال، پاکستان سافٹ ویئر ایکسپورٹ بورڈ کے حکام اور دیگر معروف آئی ٹی و ٹیلی کام کمپنیوں کے عہدیداران بھی تقریب میں موجود تھے۔

انوشہ رحمٰن نے اپنی گفتگو کے دوران بتایا کہ ملک میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کا شعبہ پھل پھول رہا ہے اور گذشتہ 2 سالوں کے دوران براڈ بینڈ کی رسائی 3 فیصد سے بڑھ کر 27 فیصد ہوگئی ہے۔ان کامزید کہنا تھا کہ ’ہم پاکستان کو ڈیجیٹل پاکستان بنانے کے لیے کام کررہے ہیں اور مستقبل میں آئی ٹی کے ذریعے ڈیجیٹل اکانومی، فری لانس، اسٹارٹ اپس، ای کامرس اور موبائل ایپلی کیشن بنانے کے لیے بھی کام جاری ہے‘۔

آر سی سی اے کے صدر عامر اقبال کا کہنا تھا کہ آئی سی ٹی ایوارڈز کا آغاز اداروں اور آئی ٹی کے شعبے میں صحت مند مقابلے کے فروغ دینے کے لیے کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کا آئی سی ٹی کے شعبے میں مارکیٹ شیئر تقریباً 3 ارب ڈالر کے برابر ہے تاہم حکومت کی جانب سے صنعت کے فروغ کے لیے کوئی اقدامات نہیں اٹھائے گئے۔

عامر اقبال کا مزید کہنا تھا کہ راولپنڈی اور اسلام آباد ملک کے کل آئی سی ٹی کاروبار میں 40 فیصد حصہ رکھتے ہیں جس کی وجہ جڑواں شہروں میں قائم ہونے والی کئی ملٹی نیشنل کمپنیاں ہیں۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری