اسرائیلی پولیس نے 16 سالہ فلسطینی لڑکی کو گولیوں سے چھلنی کر دیا + تصویر

خبر کا کوڈ: 1401064 خدمت: اسلامی بیداری
فلسطینی لڑکی

یروشیلم میں دمشق گیٹ کے قریب اسرائیلی پولیس نے 16 سالہ فلسطینی لڑکی کو گولیوں سے بھون ڈالا۔

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق اسرائیلی پولیس نے ظلم کی ایک اور داستان رقم کرتے ہوئے یروشیلم میں دمشق گیٹ کے قریب اسرائیلی پولیس نے 16 سالہ فلسطینی لڑکی کو گولیوں سے بھون ڈالا۔

شہید بچی کی شناخت فاطمہ عفیف عبدالرحمن حاجی کے نام سے ہوئی ہے جس کا تعلق قراوة بنی زید  کے گاوں سے بتایا جا رہا ہے۔

چشم دید گواہان کا کہنا ہے کہ شہید فاطمہ پولیس اہلکاروں سے کم از کم 10 میٹر کے فاصلے پر کھڑی تھی کہ اچانک ایک پولیس اہلکار نے چاقو چاقو کہہ کر چلانا شروع کر دیا اور فورا ہی 5 اہلکاروں نے اس لڑکی پر فائر کھول دیا۔

انہوں نے مزید بتایا کہ فاطمہ گولیاں لگنے کے نتیجے میں نیچے گر گئی تاہم اسرائیلی پولیس نے اس کے زمین پر گر جانے کے بعد بھی اس پر فائرنگ کا سلسلہ جاری رکھا۔

 گولیوں کے متعدد راونڈ فائر کرنے سے قریبی کھڑکی ایک ٹیکسی کو بھی نقصان پہنچا اور اس کا ایک ٹائر پنکچر ہو گیا۔

اس المناک واقعے کے بعد موقعے پر درجنوں فلسطینی جمع ہو گئے جن کو منتشر کرنے کے لئے اسرائیلی سپاہیوں نے مرچوں والے سپرے کا استعمال کیا۔

یاد رہے کہ 2017 کے آغاز سے اب تک 7 فلسطینی بچے اور 13 بڑے صہیونی فوج کے ہاتھوں شہید ہو چکے ہیں۔

جبکہ اکتوبر 2015 سے اب تک 262 فلسطینی اسرائیلی درندگی کی بھینٹ چڑھ چکے ہیں۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری