آم ہائی بلڈ پریشر میں کمی کا باعث بن سکتا ہے

خبر کا کوڈ: 1434312 خدمت: دنیا
انبه

ہائی بلڈ پریشر کو صحت مند غذا کی مدد سے کافی حد تک بہتر کیا جاسکتا ہے تاہم آم کھانا اس حوالے سے زیادہ مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق یہ بات ایک نئی طبی تحقیق میں سامنے آئی ہے کہ آم ہائی بلڈ پریشر میں کمی کا باعث بن سکتا ہے۔

ٹیکساس کی اے اینڈ ایم یونیورسٹی اور اوکلاہاما اسٹیٹ یونیورسٹی کی مشترکہ تحقیق کے مطابق موسم گرما میں ہر ایک کو پسند یہ پھل متعدد طبی فوائد کا حامل ثابت ہوتا ہے۔

تحقیق کے مطابق آم کھانا بلڈ پریشر کو بہتر کرتا ہے، بلڈ شوگر کو کنٹرول جبکہ نظام ہاضمہ کو بہتر بناتا ہے جبکہ آم کھانے کی عادت میٹابولک امراض اور ورم کے خطرے کو کم کرنے میں بھی مددگار ثابت ہوتی ہے۔

اس تحقیق کے دوران مختلف رضاکاروں کو چھ ہفتوں تک روزانہ آموں کا چار سو گرام گودا کھلایا گیا۔

نتائج سے معلوم ہوا کہ آم کے استعمال سے جسم میں ورم کش فوائد بڑھے اور عام طور پر یہ ورم ہی ہائی بلڈ پریشر کا اصل سبب ہے۔

محققین کا کہنا تھا کہ آم کو کھانے سے خون کی شریانوں کو بھی بہتر بنایا جاسکتا ہے جس سے ہائی بلڈ پریشر کے ساتھ امراض قلب اور فالج وغیرہ کا خطرہ بھی کم کیا جاسکتا ہے۔

یہ بتانے کی ضرورت نہیں کہ ہائی بلڈ پریشر کے نتیجے میں دل اور خون کی شریانوں پر اضافی بوجھ بڑھتا ہے جو وقت گزرنے کے ساتھ ہارٹ اٹیک یا فالج کا باعث بن جاتا ہے۔

    تازہ ترین خبریں