خیر پور انتظامیہ کا انوکھا کارنامہ، یوم القدس کی چاکنگ مٹا ڈالی

خبر کا کوڈ: 1442120 خدمت: اسلامی بیداری
القدس

صوبہ سندھ کے شہر خیرپور میں فلسطینی مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کرنے کے لئے جمعۃ الودع کو منائے جانے والے یوم القدس کی وال چاکنگ کو کسی اسرائیلی ایجنٹ کالعدم جماعت نے نہیں بلکہ خود خیر پور انتظامیہ نے مٹادیا ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق خیرپور میراث ہے جو اسلامی جمہوری پاکستان کے صوبہ سندھ کا ایک اہم شہر ہے لیکن ایسا لگتا ہے کہ یہاں کی انتظامیہ سوتے وقت اقدامات کرتی ہے۔ 

خیر پور میں پاکستان پیپلز پارٹی کے زیر اثر انتظامیہ ہے جبکہ سابق وزیر اعلیٰ قائم علی شاہ کا تعلق بھی خیرپور ضلع سے ہی ہے، انتظامیہ کی یہ حرکت اسرائیل نوازی اور فلسطینی عوام سے دشمنی کے مترادف ہے۔

یہ بات بھی ذہن نشین رہے کہ خیر پور انتظامیہ اس سے قبل بھی کالعدم جماعتوں کی ایماء پر شہر خیرپور میں شیعہ مسلمانوں کے خلاف کارروائیوں میں ملوث رہی ہے۔ 

دو ماہ قبل ہی بازور طاقت پیپلز پارٹی کی خیرپور انتظامیہ نے عظمت فاطمہ الزہر سلام اللہ علیہا کانفرنس کو روکوا دیا تھا، جبکہ اس کے کچھ عرصے بعد ہی کالعدم دہشتگرد جماعت کا بڑا جلسہ کرنے کی اجازت دی گئی تھی جس میں کالعدم گروہ سپاہ صحابہ کے اورنگزیب فاروقی نے شرکت کی تھی۔

جہاں خیرپور کے مختلف علاقوں میں یوم القدس کی چاکنگ مٹائی گئی ہے وہیں پر پولیس کی جانب سے مجلس وحدت مسلمین اور آئی ایس او کے کارکنان کیخلاف ایف آئی آر درج کرنے کی دھمکیاں بھی دی جا رہی ہیں۔ 

اسی طرح کراچی کے علاقہ پھپری سے بھی یہ اطلاعات موصول ہوئی ہیں کہ پولیس انتظامیہ نے اسی قسم کی حرکت کرتے ہوئے کئی جوانوں کو گرفتار کیا ہے، یہ علاقہ بھی پی پی پی کے زیر اثر ہے۔

لہذا پیپلز پارٹی کی قیادت اور سندھ حکومت کو موقف واضح کرنا ہوگا کہ آیا وہ فلسطینی مسلمانوں کے ہمدرد ہیں یا اسرائیل کے حمایتی۔

ایم ڈبلیو ایم کے ترجمان کا کہنا ہے کہ اس عمل کی شدید مذمت کرتے ہیں اور اعلان کرتے ہیں کہ یوم القدس کی ریلیاں اپنے شیڈول اور پہلے سے زیادہ جوش و خروش سے منعقد کی جائیں گی کہیں بھی اگر کوئی مسئلہ ہو ا تو ذمہ دار انتظامیہ ہو گی۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری