چینی شہریوں کی حفاظت کیلئے 15 ہزار سیکورٹی اہلکار مامور

حکومت پاکستان نے توانائی اور انفراسٹرکچر کے منصوبوں پر کام کرنے والے چینی شہریوں کی حفاظت کے لیے 15 ہزار سیکورٹی اہلکاروں کو تعینات کردیا ہے۔

چینی شہریوں کی حفاظت کیلئے 15 ہزار سیکورٹی اہلکار مامور

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق صدرمملکت ممنون حسین کا کہنا ہے کہ پاکستان نے توانائی اور انفراسٹرکچر کے منصوبوں پر کام کرنے والے چینی شہریوں کی سیکیورٹی کے لیے 15 ہزار کی مضبوط فورس تعینات کر دی ہے۔

ایوان صدر سےجاری ہونے والے اعلامیے کے مطابق صدر ممنون حسین نے پاکستان کے دورے پرآئے ہوئے چینی وزیرخارجہ کو بتایا کہ چینی شہریوں کی حفاظت حکومت پاکستان کی 'اولین ترجیح' ہے۔

چین نے پاکستان کے ساتھ 50 ارب ڈالر کے اقتصاری راہداری کے منصوبے کے تحت توانائی، ٹرانپسورٹ اور کئی تعمیراتی منصوبوں پر سرمایہ کاری کر رکھی ہے۔

خیال رہے کہ حالیہ دنوں میں کوئٹہ میں دو چینی باشندوں کے اغوا کے بعد پاکستان میں موجود چینی  شہریوں کی سیکیورٹی کے حوالے سے سوالات اٹھائے جارہے تھے۔

بعدازاں دولت اسلامیہ (داعش) نے چینی باشندوں کو قتل کرنے کا دعویٰ کیا تھا جس کی باقاعدہ تصدیق نہیں کی جاسکی۔

ممنون حسین کا کہنا تھا کہ حکومت اغواکاروں کی گرفتاری کے لیے ہرممکنہ کوشش کررہی ہے۔

دوسری جانب چین نے پاکستان کو پیش کش کی تھی کہ وہ اپنے باشندوں کے اغوا کی تفتیش میں تعاون کرنے کو تیارہیں۔

چینی وزیرخارجہ نے اپنے دورے میں مشیرخارجہ سرتاج عزیز کے علاوہ پاک فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ سے بھی ملاقات کی۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری