اسرائیلی فوج کی غزہ پر راکٹوں اور توپ کے گولوں سے بمباری

خبر کا کوڈ: 1447760 خدمت: مشرق وسطی
جولان اشغالی ارتش اسرائیل

حماس کے ترجمان نے کہا ہے کہ اسرائیل غزہ سے راکٹ داغے جانے کا دعویٰ کرتے ہوئے مزاحمتی علاقوں کو ہدف بنانے اور موجودہ حالات میں کشیدگی پیدا کرنے کا جواز بنارہا ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق اسرائیلی فوج کے ترجمان اویژا اودرائی کے مبینہ غزہ سے اسرائیل پر راکٹ حملہ ہونے کے اعلان کے بعد اسرائیلی جنگی طیاروں نے حماس کی فوجی شاخ عز الدین القسام بریگیڈ کے غزہ کی پٹی کے مغرب اور  شمالی رفاح کے دو ٹھکانوں سمیت غزہ کی ایک خالی اراضی پر بمباری کی۔

اودرائی نے اسرائیل کی بمباری کے حوالے سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ کے ذریعے اپنے اعلان میں کہا ہے کہ یہ حملہ غزہ کے علاقے شاعر نیگو  سے داغے گئے راکٹ  حملے کے  جواب میں کیا گیا ہے۔

ترجمان کا کہنا تھا کہ چونکہ غزہ کی پٹی حماس کے زیر کنٹرول ہے لہذا اسرائیل پر ہونے والے ہر طرح کے حملے کی ذمہ داری اسی پر عائد کی جائیگی۔

غزہ کی وزارت داخلہ نے اپنے تحریری اعلان میں کہا ہے کہ اسرائیلی فوج کے مذکورہ  حملوں سے محض مختلف مقامات کو نقصان پہنچا ہے۔

ادھر  غزہ کی وزارت صحت کے ترجمان  اشرف الاکدرہ  کا کہنا ہے کہ ان حملوں میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا۔

حماس کے ترجمان  فیضی برحوم نے اعلان کیا ہے کہ اسرائیل غزہ سے راکٹ داغے جانے کا دعویٰ کرتے ہوئے مزاحمتی علاقوں کو ہدف بنانے اور موجودہ حالات میں کشیدگی پیدا کرنے کا جواز بنارہا ہے،  یہ اسرائیل کی ایک خطرناک اور  ایک جانی پہچانی چال ہے۔

    تازہ ترین خبریں