تحریر: سید عارف رضا زیدی

سوشل میڈیا پر وائرل، "زید حامد" کے نام کھلا خط

خبر کا کوڈ: 1448246 خدمت: پاکستان
زید حامد

زید حامد کے نام سوشل میڈیا ایکٹیوسٹ سید عارف رضا زیدی کا کھلا خط قارئین کے پیش خدمت ہے۔

خبر رساں ادارہ تسنیم: سوشل میڈیا ایکٹیوسٹ سید عارف رضا زیدی کے خط کا متن من و عن پیش خدمت ہے۔

جناب زید زمان حامد صاحب،

جیسا کہ آپکے علم میں ہوگا کہ گزشتہ دنوں23 جون 2017 کو پاراچنار میں ایک اندوہناک واقعہ پیش آیا 27 رمضان المبارک، جمعۃ الوداع کےدن عالمی یوم القدس کی ریلی پر طوری بازار میں یکے بعد دیگرے دو دھماکوں کے نتیجے میں تقریبا 100 شہادتیں رونما ہوئیں جس پر لواحقین سراپا احتجاج ہوئے تو وہاں پر تعینات فرنٹئیر کانسٹیبلری کے کرنل ملک عمر کے حکم پر ان مظلوم اور پر امن احتجاجی مظاہرین پر پاکستانی سکیورٹی فورسز نے سیدھی فائرنگ شروع کر دی جسکے نتیجے میں  شہادتوں میں مزید اضافہ ہوا۔ ستم بالا ستم یہ کہ یہ کوئی پہلا واقعہ نہیں تھا۔۔۔ اس سے قبل بھی اسی سال 2017 میں پاراچنار پر اسی طرح 4 حملے ہوئے جس کے بعد سراپا احتجاج لواحقین پر فرنٹئیر کانسٹیبلری کے کرنل ملک عمر ہی کے حکم پر یونہی فائرنگ کی گئی جس سے معصوم انسانی جانوں کا ضیاع ہوا۔

جب ان ستم کے ماروں نے دھماکے کے شہداء اور اس پر سراپا احتجاج پیاروں پر فائرنگ کے شہداء کے جنازے رکھ کر ایف سی کے اس متعصب کرنل ملک عمر کے خلاف دھرنا دیا جس پر لبیک کہتے ہوئے پورے پاکستان سے غیور شیعہ سڑکوں پر آ بیٹھے تو اچانک آپکو بے پر کی سوجھی اور آپ نے کمال مہارت کے ساتھ اسے پاکستانی فوج کے خلاف ملت جعفریہ کی سازش قرار دے کر پوری ملت جعفریہ پاکستان کو #انڈیا کی خفیہ ایجنسی #را کا ایجنٹ قرار دے دیا اور لگے ہاتھوں آپ نے #ایران کو بھی رگڑا لگا ڈالا کہ اس سازش میں #انڈیا اور #ایران مشترکہ طور پر شامل ہیں اور ملت جعفریہ پاکستان ان دونوں ممالک کے ہاتھوں کا کھلونا بنی ہوئی ہے۔

ہمیں آپ کے اس بیان سے دکھ تو بہت پہنچا لیکن ہم آپ کے شکر گزار ہیں کہ آپ نے بہت جلد اپنا اصل چہرہ بے نقاب کر دیا۔ ویسے ہمیں آپ جیسوں سے توقع کچھ ایسی ہی تھی کیونکہ آپ کے خلیفہ ڈونلڈ ٹرمپ نے پچھلے دنوں ہی سعودی عرب کے شہر ریاض میں امریکی عرب اسلامک اجلاس کی صدارت کی جس میں یہ اعلان کیا کہ اب کی بار ہمارا (عالمی استکبار ا) مشترکہ نشانہ #ایران ہے۔۔!! لہذا تابیدار پالتو غلام کی طرح آپ نے آؤ دیکھا نہ تاؤ اور ہماری توقع پر بہت ہی پہلے پورا اتر گئے اور ہمیں یک دم ہی غدار قرار دے دیا۔۔!! خیر یہ کوئی نئی بات نہیں پاکستانی تاریخ ایسے واقعات سے بھری پڑی ہے کہ جب بھی کسی کو عتاب کا شکار بنانا مقصود ہوتا ہے تو پاکستانی اسٹیبلشمنٹ اور انکے آپ جیسے نمک خوار اسے غدار بنا کر پیش کرتے ہیں جس کے نتائج بعد از آں سقوط ڈھاکہ جیسے افسوسناک واقعات کی صورت میں رونما ہوتے ہیں۔

زید حامد صاحب میرے آپ سے چند معصومانہ سوالات ہیں جنکے جوابات درکار ہیں:

1۔ اگر آپ کے مطابق حالیہ و سابقہ دہشتگردی کے واقعات اور شیعہ قتل عام #را کی سازش ہے تو کیا پاراچنار میں بم دھماکوں کے بعد مظاہرین پر فائرنگ کرنے والے کرنل عمر بھی #را کے ایجنٹ و آلہ کار ہیں؟

2۔ آپ کے مطابق پاکستان میں شیعہ نسل کشی میں #انڈیا ملوث ہے تو پھر آپ نے ملت جعفریہ پاکستان کو اسی #انڈیا کی خفیہ ایجنسی #را کا ایجنٹ کیسے قرار دے دیا؟

3۔ اگر ملت جعفریہ پاکستان #را ایجنٹ ہے تو بھلا #را اپنے ہی ایجنٹوں کو کیونکر مروائے گی؟

4۔ اگر #انڈیا کی خفیہ ایجنسی #را ہی کراچی سے لے کر کوئٹہ اور پاراچنار غرض یہ کہ پاکستان میں تمام دھشتگردی کی زمہ دار ہے تو پھر ہماری عالمی نمبر 1 ایجنسیاں کہاں ہیں اور کیا کر رہی ہیں؟

5۔ اگر آپ #را ایجنٹ #کلبھوشن_یادیو کے پاس ایرانی پاسپورٹ ملنے پر ایرانی اسٹیبلشمنٹ کو قصوروار گردانتے ہیں تو بتائیں کہ عالمی دھشتگر #اسامہ_بن_لادن کو پاکستان میں رہائش اور #ملا_منصور کو پاکستانی شناختی کارڈ کس نے دیئے؟

فی الحال اتنے ہی سوالات کافی ہیں جنکے تسلی بخش جوابات کا منتظر ہوں۔

اب آئیے آپ کی چرب زبانی پر کچھ بات ہو جائے۔ آپ جوش خطابت و کتابت میں الزام لگاتے ہیں کہ پاکستانی شیعہ پاکستان میں حزب اللہ کی طرز پر تنظیم بنانے کی خواہش رکھتے ہیں جو انہیں (ملت جعفریہ پاکستان کو) تباہ و برباد کر دے گی۔۔!!

آئیے ہم آپکو اس بات کو جواب 02 جمع 02 = 04 کر طرز پر سمجھاتے ہیں:

پاکستان کی کل آبادی کا کم از کم 25 فیصد حصے کا تعلق فقہی اعتبار سے فقہ جعفریہ سے ہے یعنی 20 کروڑ کا 25 فیصد 05 کروڑ بنا۔ 05 کروڑ میں سے خواتین کا 50 فیصد نکال دیں تو تقریبا ڈھائی کروڑ مرد بچتے ہیں۔ ان میں سے بھی اگر 50 فیصد بچوں کو نکال دیں تو تقریبا 1 کروڑ 25 لاکھ جوان بنتے ہیں۔

اب اگر ان جوانوں میں سے بھی صرف 10 فیصد جو کہ تقریبا ساڑھے بارہ لاکھ جوان بنتے ہیں، یہ ٹھان لیں کہ ہم نے حزب اللہ طرز پر کوئی تنظیم بنانی ہے تو بھلا کس مائی کے لعل میں دم ہے کہ انہیں روک لے؟؟؟

یہ تو تھا آپ کے الزام کا حسابی کتابی تجزیہ۔۔۔!! اب اسکا نصابی جواب بھی سن لیں کہ ملت جعفریہ پاکستان نے پاکستان میں دھشتگردی کے خلاف جنگ میں کم از کم 25000 جنازے اٹھائے ہیں لیکن کبھی ارض پاک کے خلاف کوئی بات نہیں کی بلکہ ہر بار یہ نعرہ لگایا کہ "پاکستان بنایا تھا، پاکستان بچائیں گے" اس قربانی کے باوجود آپ کا یہ بے بنیاد الزام کے پاکستانی شیعہ کوئی عسکری تنظیم بنا کر خدانخواستہ دشمن کے ہاتھوں کا کھلونا بننا چاہتے ہیں تو یہ ہمارے شہداء کی توہین اور زخمیوں کے زخموں پر نمک چھڑکنے کے سوا اور کچھ نہیں۔ لہذا آپ سے گزارش ہے کہ آپ مملکت خداداد پاکستان پر رحم کھائیں اور اپنے بیرونی آقاؤں کے اشاروں پر پاکستانی قوم کو مزید تقسیم کرنے کی سازش سے باز رہیں۔ شکریہ۔

پاکستان زندہ باد، لبیک یا حسین علیہ السلام۔

    تازہ ترین خبریں