پاراچنار سانحہ:

وزیراعظم کا شہدا اور زخمیوں کے لئے امداد کا اعلان؛ متاثرین کا لینے سے انکار

خبر کا کوڈ: 1448889 خدمت: پاکستان
پاراچنار-5

وزیراعظم نواز شریف نے اعلان کیا ہے کہ پارا چنار دھماکے میں شہید ہونے والے افراد کے اہل خانہ کو10,10 لاکھ روپے جبکہ زخمیوں کے لیے 5,5 لاکھ روپے دئیے جائیں گے، تاہم لواحقین اور متاثرین نے امداد لینے سے یکسر انکار کر دیا ہے۔

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق پاراچنار میں دھماکوں اور کرنل عمر کے حکم سے ایف سی کی مظاہرین پر سیدھی فائرنگ کے نتیجے میں ہونے والی شہادتوں کے ایک ہفتے بعد بالآخر وزیراعظم نواز شریف نے متاثرین کے لئے مالی امداد کا اعلان کر دیا، جس کو دھرنے میں بیٹھے ہوئے افراد نے یکسر رد کر دیا ہے۔

مقررین  نے دھرنے سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاراچنار کی عوام کو پاکستانی سمجھ کر ملک کے باقی علاقوں کے برابر امداد دی جائے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان میں درجہ بندی کسی صورت قبول نہیں کی جائے گی۔

دوسری جانب صوبائی وزیر ارشد عمرزئی بھی دھرنے میں پہنچ گئے۔

صوبائی وزیر ارشد عمرزئی نے دھرنے سے خطاب میں ان کا کہنا تھا کہ پشتونوں کو قربانی کا بکرا بنایا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پشتونوں کے جنازے اٹھا اٹھا کر تھک گئے ہیں، مذید برداشت نہیں کر سکتے۔

ان کا کہنا تھا کہ یکم جولائی تک مطالبات منظور نہ ہوئے تو پشاور کو بلاک کر ینگے۔

وزیراعظم پاراچنار کو پاکستان کا حصہ اور یہاں کے عوام کو پاکستانی سمجھ کر پاراچنار آئیں۔

یاد رہے کہ آس پاس کے گاوں سمیت مسیحی برادری بھی اس احتجاجی دھرنے میں شامل ہوگئی  ہے۔

ذرائع کے مطابق دھرنے میں بیٹھے ہوئے افراد کی تعداد 60 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری