پاکستان تبت پر چین کے موقف کا حامی ہے، صدر ممنون حسین

خبر کا کوڈ: 1491973 خدمت: پاکستان
ممنون حسین

پاکستان کے صدر نے چینی سرزمین تبت پر بھارتی مداخلت پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد تمام امور میں بیجنگ کی مکمل حمایت کرتا ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق پاکستان کے صدر ممنون حسین نے چین کے نائب وزیر اعظم وینگ یینگ سے ایوان صدر میں ملاقات کے دوران حال ہی میں چینی سرزمین پر بھارتی مداخلت پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ چین نے اس موقع پر جس تحمل کا مظاہرہ کیا وہ قابل تعریف ہے۔

انہوں نے کہا کہ تائیوان، تبت، سنکیانگ اور ساؤتھ چائنا سی سمیت پاکستان تمام معاملات میں چین کی مکمل حمایت کرتا ہے اور چین کے تعاون سے دہشت گردی کے خاتمے کے لیے کام کرتا رہے گا۔

ان کا کہنا تھا کہ افغانستان میں امن کے لیے چین کا کردار قابل تحسین ہے اور ہم توقع کرتے ہیں کہ ان کوششوں کے مثبت نتائج برآمد ہوں گے اور یہ مسئلہ جلد حل ہو جائے گا۔

صدر مملکت نے کہا کہ دونوں ملک دکھ اور سکھ کے ہر موقع پر ایک دوسرے کے کام آتے ہیں جو دنیا کے لیے ایک مثال ہے۔

بھارت سے مذاکرات کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ پاکستان، بھارت کے ساتھ جموں و کشمیر سمیت تمام متنازع مسائل بات چیت کے ذریعے حل کرنا چاہتا ہے۔

ڈان نیوز کے مطابق ملاقات کے دوران صدر ممنون حسین نے پاکستان کے یوم آزادی کی 70ویں سالگرہ کی تقریبات میں اعلیٰ ترین سطح پر چین کی شرکت پر معزز مہمان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اس سے دونوں ملکوں کے پرخلوص رشتے کا اندازہ ہوتا ہے۔

اس موقع پر چین کے نائب وزیر اعظم کا کہنا تھا کہ علاقائی امن و استحکام اور ترقی کے لیے پاکستان اور چین کے درمیان تعاون جاری رہے گا اور دونوں ملک انسانیت کی ترقی اور خوشحالی کے لیے مل کر کام کرتے رہیں گے۔

دونوں قائدین نے پاک چین اقتصادی راہداری منصوبے کی جلد تکمیل پر بھی زور دیا۔

ملاقات میں دونوں ممالک کے وفود بھی شریک تھے۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری