سوشل میڈیا پر پاک فوج کیخلاف اب تک کی سب سے بڑی سازش/ سانحہ اے پی ایس میں پاک فوج ملوث تھی!

خبر کا کوڈ: 1500842 خدمت: پاکستان
دہشتگرد

سوشل میڈیا پر پاک فوج کیخلاف نئی مہم چلانے والے دہشتگرد کا کہنا ہے کہ پاک فوج کے عناصر نے سانحہ اے پی ایس کرایا تاکہ میڈ یا کے ذریعے دنیا کو پتہ چل سکے کہ یہ کام طالبان نے کیا ہے۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق پاکستان میں دہشت گردی کے خلاف انتہائی موثر کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والی پاک فوج کے خلاف دشمن محاذ اور میدان جنگ تبدیل کر کر کے کارروائیاں کر رہا ہے۔

ڈیلی پاکستان کے مطابق یہ ہی وجہ ہے کہ جب پاک فوج نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اہم کامیابیاں حاصل کر لیں اور دہشت گردوں کو بھاگنے پر مجبور کردیا تو اب ملک دشمن عناصر سوشل میڈ یا پر پاک فوج کے خلاف زہر افشانی کرتے رہتے ہیں۔

پاکستانی مکمل طور پر اس بات سے آگاہ ہیں کہ سوشل میڈ یا پر ملک دشمن عناصر پاک فوج کے خلاف مہم چلاتے رہتے ہیں اور کئی بار پاک فوج بھی اس بات کا ذکر کر چکی ہے تاہم اب سوشل میڈیا پر نئی مہم چل رہی ہے اور اس بار پاک فوج سے بھاگا ہوا غدار جوان مدثر اقبال فوج کے خلاف زہر افشانی کر رہا ہے ۔اس نے ایک پیغام میں الزام لگا یاہے کہ پاک فوج کے عناصر نے سانحہ اے پی ایس کرایا تاکہ میڈ یا کے ذریعے دنیا کو پتہ چل سکے کہ یہ کام طالبان نے کیا ہے۔

اس نے کہا ہے کہ ملا فضل اللہ سے رابطہ کر کے کہا گیا کہ آپ اے پی ایس میں حملہ کر کے ہمارے سکول کے بچوں کو یرغمال بنائیں اور اپنے گرفتار ساتھیوں کی رہائی کا مطالبہ کریں تو حکومت مان جائے گی۔ ملا فضل اللہ رضامند ہو گیا اور اس نے دہشت گردوں کو بھیج دیا۔ وہاں پہنچ کر ان دہشت گردوں کو کہا گیا کہ بچوں کو مار دیں تاکہ میڈیا پر یہ بات سامنے آئے کہ یہ کام طالبان نے کیا۔

واضح رہے کہ مدثر اقبال پاک فوج سے بھاگا ہوا غدار جوان ہے جس نے جماعت الاحرار میں شمولیت اختیار کرلی تھی اور افغانستان سے پچاس دن کی ٹریننگ بھی حاصل کی تھی۔ مدثر اقبال نے راولپنڈی کی ای ایم ای سوسائٹی میں اپنی اہلیہ کے ساتھ مل کر ایک مالی کو قتل کیا تھا جس پر اس کی اہلیہ کو گرفتار کر لیا گیا تھا لیکن وہ خود فرار ہو کر جماعت الاحرار میں شامل ہو گیا تھا۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری