شمالی افغانستان کے علاقے "میرزا ولنگ" پر دوبارہ طالبان کا قبضہ

شمالی افغانستان کے علاقے میرزا ولنگ پر ایک بار پھر طالبان نے قبضہ کرکے افغان حکومت کو بے دخل کردیا ہے۔

میرزاولنگ

تسنیم خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق شمالی افغانستان میزاولنگ پر ایک بار پھر طالبان کا قبضہ ہوگیا ہے۔

صوبہ سرپل کے عوام کا کہنا ہے کہ گزشتہ رات میرزاولنگ پر طالبان نے قبضہ کرکے حکومت کے مکمل طور پر بے دخل کردیا ہے۔

سرپل کے صوبائی کونسل کے سربراہ «محمدنور رحمانی» کا کہنا ہے کہ مزید علاقوں کی طرف طالبان کی پیشقدمی جاری ہے۔

رحمانی کا کہنا ہے کہ حکومتی سیکیورٹی فورسز کی حکمت عملی کی کمزوری کی وجہ سے طالبان میرزاولنگ پر دوبارہ قبضہ کرنے میں کامیاب ہوئےہیں۔

چند روز پہلے پکتیا کے صوبائی پولیس کمانڈر نے کہا تھا کہ جانی خیل شہر میں پولیس کے علاوہ اعلیٰ سیکورٹی فورسز کو تعیینات نہ کیا گیا تو ایک بار پھر شہر طالبان کے قبضے میں جا سکتا ہے۔

طالبان کے ترجمان «ذبیح‌الله مجاهد» کا کہنا ہے کہ میرزا ولنگ اب مکمل طور پر طالبان کے قبضے میں ہے اور سٹی پولیس ہیڈ کوارٹر اور کمانڈ سینٹر کا کنٹرول سنبھالا گیا ہے۔

دوسری طرف افغان حکام نے کسی قسم کے رد عمل کا اظہار نہیں کیا ہے۔

حال ہی میں  شمالی اور جنوبی افغانستان میں طالبان کے حملوں میں شدت آئی ہے اور چند دونوں کے مختصر عرصے میں صوبہ غور کے علاقے «تیوره»، صوبہ سرپل کے علاقے «کوهستانات»، اور صوبہ فاریاب کے علاقے «لولاش» پر طالبان نے قبضہ کرلیا ہے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی دنیا خبریں
اہم ترین دنیا خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری