شمالی افغانستان میں امریکی حملے میں 15 عام شہری جاں بحق

خبر کا کوڈ: 1549327 خدمت: دنیا
ارتش آمریکا

افغانستان کے صوبہ ننگرہار سے موصولہ اطلاعات کے مطابق امریکی فوج نے حصارک اور پیچراگام نامی علاقوں میں کارروائی کرکے 15 عام شہریوں کو موت کی نیند سلا دیا۔

تسنیم خبر رساں ادارے نے "نن‌تکی‌آسیا" کے حوالے سے بتایا ہے کہ امریکی فوج نے حصارک شہر کے علاقے دواب میں فائرنگ کرکے 5 عام شہریوں کو ہلاک اور ایک کو گرفتار کرلیا ہے۔

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ امریکی فوج نے رات کی تاریکی میں علاقے پر حملہ کرکے کئی رہائشی مکانات کو بھی تباہ کردیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق امریکی فوج نے پیچراگام نامی علاقے میں بھی کم از کم 10 افغان شہریوں کو ہلاک اور متعدد دیگر کو شدید زخمی کردیا ہے۔

مقامی لوگوں کا کہنا ہے کہ امریکی فوج عمدا عام شہریوں کا قتل عام کررہی ہے۔

واضح رہے کہ افغانستان میں اس قسم کے متعدد واقعات پہلے بھی پیش آچکے ہیں۔

صوبہ ننگرہار کے پولیس کمانڈرکا کہنا ہے کہ انہیں امریکی فوج کے ہاتھوں افغان شہریوں کی ہلاکت کے بارے میں کوئی خبر نہیں ہے۔

افغانستان کے عوام غیر ملکی فوجیوں اور ان کی خود سرانہ کارروائیوں کو اپنے ملک کی بدامنی کا اصل سبب قرار دیتے ہیں۔

خیال رہے کہ امریکا ہمیشہ سے یہ دعویٰ کرتا آیا ہے کہ وہ افغانستان میں طالبان پر بمباری کرتا ہے لیکن عینی شاہدین بتاتے ہیں کہ امریکا کے ڈرون حملوں میں زیادہ ترعام شہری ہی نشانہ بنتے ہیں۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری