لاس اینجلس میں سعودی اور اسرائیلی حکام کا تعلقات کو معمول پر لانے کیلئے اجلاس

خبر کا کوڈ: 1569149 خدمت: اسلامی بیداری
عربستان و اسرائیل

سعودی اور صہیونی حکام نے لاس اینجلس میں ملاقات کے دوران دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو وسعت دینے کی ضرورت پر زور دیا گیا۔

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق یہ اجلاس مشرق وسطی سیکورٹی فورم کے موقع پر سینائی مندر لاس اینجلس میں منعقد ہوا۔ اس اجلاس میں شہزادہ ترکی الفیصل، سابق سعودی انٹیلی جنس چیف، شہزادہ خالد بن سلمان، امریکہ میں سعودی سفیر اور ڈاکٹر یوسف بن ٹراڑ نے شرکت کی۔ 

دونوں ممالک نے مشرق وسطی، عرب-اسرائیلی تعلقات اور سعودی عرب-اسرائیل کے سفارتی تعلقات کے امکانات میں پیش رفت پر تبادلہ خیال کیا۔

ذرائع نے بتایا کہ انہوں نے تعلقات کی معمول کے عمل کو تیز کرنے اور باہمی غلط فہمی کا خاتمہ کرنے کے لئے ایک ٹائمبل مقرر کیا ہے، جو دونوں ممالک کے سینئر حکام کو پیش کیا جا رہا ہے.

یہ اسرائیل اور سعودی عرب کے درمیان پہلی رسمی ملاقات تھی جس میں دونوں ملکوں کے بے شمار حکام شامل تھے۔ شہزادہ ترک الفیصل سمیت بعض ریٹائرڈ سیاستدانوں نے پہلے ہی سعودی عرب اور اسرائیل کو ایک دوسرے کے قریب لانے کے لئے سیاسی لابی میں کردار ادا کیا ہے۔

سعودی عرب کے نئے ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سماجی – سیاسی پالسیوں کے علاوہ، سلطنت کی خارجہ پالیسیوں میں بنیادی اصلاحات متعارف کرانے کا مقصد رکھتے ہیں۔ اسرائیل کے ساتھ تعلقات قائم کرنا اسی ایجنڈے کے ساتھ لائن میں ہوگا۔

    تازہ ترین خبریں
    خبرنگار افتخاری