یمن پر سعودی اتحادی افواج کے حملے جاری، 23 یمنی شہید

یمن پر سعودی اتحادی افواج کے تازہ ترین حملوں میں مزید 23 نہتے شہری شہید ہوگئے ہیں۔

یمن

تسنیم خبر رساں ادارے نے المیادین کے حوالے سے بتایا ہے کہ سعودی اتحادی افواج کے لڑاکا طیاروں نے یمن کے دارالحکومت صنعا سمیت مغربی مارب کے علاقے صراوح پر شدید بمباری کی ہے۔

آل سعود کے کرائے کے اہلکاروں نے البرح اور مَقْبَنه کے درمیان پائے جانے والے واحد پل پر بھی بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں کم از کم 12 عام شہری شہید ہوگئے ہیں۔

دوسری طرف یمنی سرکاری فوج اور عوامی رضاکار فورسز نے المخا، تعز اور الخوخہ میں مفرور صدر منصور ہادی کے اہلکاروں کے خلاف گھیرا تنگ کیا ہوا ہے۔

یمنی فوج اور عوامی رضا کار فورسز مفرور صدر کے اہلکاروں کے خلاف کارروائی کرتے ہوئے مختلف علاقوں میں پیش قدمی کررہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق مفرور صدر کے حامیوں اور یمنی سرکاری فوج کے درمیان شدید جھڑپیں جاری ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سعودی اتحادی فوج نے مفرور صدر کی حمایت میں یمن کے علاقے غمر اور رازخ پر بھی شدید بمباری کی ہے جس کے نتیجے میں کم ازکم 11 عام شہری شہید ہوگئے ہیں۔

یمنی فورسز نے فضائی حملوں کا جواب دیتے ہوئے البورہ اور الشیبانی کے پہاڑی علاقوں میں موجود سعودی اتحادی افواج کے ٹھکانوں پر گولہ باری کی ہے جس سے کئی ٹھکانوں کو نقصان پہنچا ہے۔

واضح رہے کہ سعودی عرب اور اس کے اتحادیوں نے 26 مارچ سنہ 2015 سے یمن کے مفرور صدر عبدربہ منصور ہادی کو اقتدار میں واپس لانے اور اس ملک پر اپنا تسلط جاری رکھنے کے لئے نہتے عوام کے خلاف جارحیت شروع کر رکھی ہے۔

یمن پر سعودی جارحیت کے نتیجے میں اب تک ہزاروں بے گناہ افراد مارے جاچکے ہیں نیز لاکھوں افراد بے گھر بھی ہو گئے ہیں۔

اہم ترین اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری