نوازشریف کےخلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت 26 فروری تک ملتوی

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت 26 فروری تک ملتوی کردی۔

نوازشریف کےخلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت 26 فروری تک ملتوی

تسنیم خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق، اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت 26 فروری تک ملتوی کردی۔

اے آر وائی کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس عامر فاروقی نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف توہین عدالت اور تقاریر پر پابندی کی درخواست پرسماعت کی۔

جسٹس عامر فاروق نے دوران سماعت ریمارکس دیے کہ اسی طرح کی درخواست لاہور ہائی کورٹ میں بھی زیرسماعت ہے، پہلے لاہور ہائی کورٹ کے احکامات کا انتظار کرلیتے ہیں۔

بعدازاں عدالت نے نوازشریف کے خلاف توہین عدالت کی درخواست پرسماعت 26 فروری تک ملتوی کردی۔

سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف دائر درخواست میں سیکریٹری اطلاعات اور چیئرمین پیمرا کو بھی فریق بنایا گیا ہے۔

درخواست گزار مخدوم نیاز کا کہنا ہے کہ نوازشریف نے ججز کی کردار کشی کو اپنا وتیرہ بنایا ہوا ہے، عدالت سے استدعا ہے کہ نا اہل وزیراعظم کی تقاریر پر آئینی طور پر پابندی لگائی جائے۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ نواز شریف نااہلی کے بعد عدالتوں کے خلاف زہرافشانی کررہے ہیں، انہیں توہین عدالت میں سزا دی جائے اورآرٹیکل 63 ون جی کے تحت بھی نا اہل کیا جائے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری