وزیراعظم پاکستان کےخلاف 2 کھرب 20 کروڑ روپے کرپشن کے الزام میں نیب میں درخواست جمع

عوامی مسلم لیگ کے صدر شیخ رشید احمد نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے خلاف 2013 میں قدرتی مائع گیس (ایل این جی) کے ٹھیکوں میں 2 کھرب 20 ارب روپے کی مبینہ کرپشن کے خلاف قومی احتساب بیورو (نیب) میں درخواست دے دی۔

وزیراعظم پاکستان کےخلاف 2 کھرب 20 کروڑ روپے کرپشن کے الزام میں نیب میں درخواست جمع

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق تحریری شکایت میں موقف اختیار کیا کہ وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے مذکورہ ٹھیکے اس وقت تفویض کیے جب وہ وزارت پیٹرولیم اور قدرتی گیس کے وزیر تھے ۔

بیورو کے ترجمان نے تصدیق کرتے ہوئے بتا یا کہ شیخ رشید احمد نے ایل این جی ٹھیکوں میں بے قاعدگیوں سے متعلق نیب میں درخواست جمع کرادی ہے۔

دوسری جانب نیب کے چیف نے یقین دہانی کرائی ہے کہ شیخ رشید کی درخواست کو قانونی تقاضوں کے مطابق دیکھا جائے گا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل شیخ رشید نے ایل این جی ٹھیکوں میں مبینہ کرپشن پر وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کے خلاف درخواست سپریم کورٹ میں جمع کرائی تھی لیکن عدالت عظمیٰ نے یہ کہہ کر درخواست خارج کردی کہ متعلقہ ادارے (نیب) میں درخواست دی جائے۔

اسی دوران شیخ رشید نے ایل این جی ریفرنس میں شاہد خاقان عباسی کے خلاف الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) میں ان کی نااہلی کی درخواست بھی دی تھی۔

شیخ رشید نے دائر پٹیشن میں الزام عائد کیا کہ ‘ایل این جی کے خریداری معاہدے میں 2 کھرب سے زائد کرپشن کے بعد وزیراعظم شاہد خاقان عباسی اور دیگر صادق و آمین رہے’۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق نیب نے شاہد خاقان عباسی کو ایل این جی پراجیکٹ میں اربوں روپے کی کرپشن کے الزام میں جاری 17 ماہ کی تفتیش کے بعد بے گناہ قرار دیا تھا۔

واضح رہے کہ پاکستان نے گذشتہ برس قطر کے ساتھ ایک ارب ڈالر کا ایل این جی معاہدہ کیا تھا، جس کے تحت قطر کی لیکیوفائیڈ گیس کمپنی لمیٹڈ 2016 سے 2031 کے دوران پاکستان اسٹیٹ آئل (پی ایس او) کو ایل این جی فروخت کرے گی۔

قبل ازیں 11 اکتوبر کو عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے پریس کانفرنس میں ایل این جی معاہدے کو تاریخ کا سب سے بڑا فراڈ قرار دیتے ہوئے وزیر اعظم شاہد خاقاب عباسی پر الزام لگایا تھا کہ انہوں نے ‘اس معاہدے کے ذریعے 200 ارب روپے کی کرپشن کی۔‘

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری