پاکستان کی موروثی سیاست؛ نواز کے بعد اب شہباز پارٹی سربراہ ہوگا

اگرچہ پاکستان میں موروثی سیاست یا خاندانی سیاست و قیادت نہ صرف اعلیٰ سطح بلکہ کونسلر سطح پر بھی مروج ہے لہذا نواز شریف کو (ن) لیگ کی پارٹی صدارت سے ہٹائے جانے کے بعد شہباز شریف کو پارٹی صدر بنانے کا حتمی فیصلہ کیا گیا ہے۔

پاکستان کی موروثی سیاست؛ نواز کے بعد اب شہباز پارٹی سربراہ ہوگا

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق شہباز شریف کو ن لیگ کا صدر بنانے کا حتمی فیصلہایکسپریس نیوز کے مطابق پنجاب ہاؤس میں نواز شریف کی زیر صدارت پارٹی اجلاس منعقد ہوا جس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد سیاسی حکمت عملی اور سینیٹ الیکشن کے حوالے سے غور کیا گیا۔

اجلاس میں وزیراعظم شاہد خاقان عباسی، وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب، عابد شیر علی، دانیال عزیز، پرویز رشید اور مریم نواز سمیت دیگر پارٹی رہنما نے شرکت کی۔

اجلاس میں گزشتہ روز سپریم کورٹ کے فیصلے پر نواز شریف نے رفقا سے صلاح و مشورے کیے، اجلاس میں سینیٹ الیکشن اور آئندہ عام انتخابات کے حوالے سے گفتگو سمیت سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد کی حکمت عملی پر بھی غور کیا گیا۔

ذرائع نے ایکسپریس نیوز کو بتایا ہے کہ مسلم لیگ (ن) کے ارکان نے شہباز شریف یا شاہد خاقان عباسی کو پارٹی صدر بنانے کی تجویز دی تھی جس پر اب مسلم لیگ ن نے نواز شریف کی جگہ شہباز شریف کو پارٹی صدر بنانے کا حتمی فیصلہ کرلیا ہے اور اس بات کی نواز شریف کے قریبی دوستوں نے تصدیق کی ہے تاہم پارٹی قائد کی حیثیت نواز شریف کے پاس ہی رہے گی۔

 ذرائع کا کہنا ہے کہ نئے صدر کے لیے نام سامنے آنے پر ن لیگ کے بیشتر رہنماؤں نے شہاز شریف کے نام پر اتفاق کیا اور کہا کہ شہباز شریف ایک غیر متنازع شخصیت ہیں اور ان کی آمد سے اداروں کے درمیان تصادم میں کمی آنے کا امکان ہے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری