پاکستانی نژاد برطانوی خاتون نے یہودی اخبار کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ جیت لیا

برطانوی دارالامرا کی ٹوری رکن سعیدہ وارثی یہودی اخبار کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ جیت گئیں۔ 

پاکستانی نژاد برطانوی خاتون نے یہودی اخبار کے خلاف ہتک عزت کا مقدمہ جیت لیا

خبررساں ادارے تسنیم کے مطابق یہودی اخبار نے سعیدہ وارثی پر داعش کی حمایت کرنے سے متعلق کئی آرٹیکلز چھاپے جس پر انہوں نے اخبار کے خلاف عدالت سے رجوع کیا۔ 

جیو نیوز سے گفتگو میں سعیدہ وارثی نے کہا کہ میری ساکھ کو نقصان پہنچانے کے لئے بار بار آرٹیکل چھاپے گئے جن میں انتہا پسندی کی حمایت اور داعش کے لئے نرم گوشہ رکھنے کے الزامات لگائے گئے۔

سعیدہ وارثی نے کہا کہ اخبار نے غلطی تسلیم کرتے ہوئے صفحہ اول پر معذرت شائع کی اور وہ 20 ہزار پاؤنڈ ہرجانہ ادا کرے گا جو فلاحی کاموں پر خرچ کروں گی۔

یاد رہے کہ 17 مئی 2010 کو سعیدہ وارثی کو برطانیہ کی حکمران جماعت کا چئیرمین اور ساتھی ہی کنزرویٹیو اور لبرل کی مخلوط برطانوی حکومت کی کابینہ میں شامل کیا گیا تو وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والی پہلی ایشیائی، مسلمان اور پاکستانی نژاد برطانوی خاتون تھیں۔ 

مارچ 2009 میں برطانیہ کی ایک مقامی تنظیم نے انہیں برطانیہ کی سب سے طاقتور مسلمان خاتون قرار دیا تھا۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری