پاکستان کے شمالی علاقوں میں سیاحوں کی آمد میں اضافہ

گلگت بلتستان کے علاوہ صوبہ خیبر پختونخواہ کے پہاڑی علاقوں بشمول وادی سوات میں بھی سیاحوں کی تعداد میں ماضی کی نسبت اضافہ دیکھا گیا ہے۔

تسنیم خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق، سیکیورٹی صورتحال میں بہتری کے بعد گزشتہ چند سالوں کے دوران پاکستان میں سیاحت میں 300 گنا اضافہ ہوگیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق صرف 2017 میں 17 لاکھ 50 ہزار سیاحوں نے پاکستان کا دورہ کیا۔

واضح رہے کہ گلگت بلتستان کا شمار ملک کے انتہائی خوبصورت علاقوں میں ہوتا ہے اور دنیا کی دوسری بلند ترین پہاڑی چوٹی ’کے ٹو‘ کے علاوہ دیگر کئی پہاڑی چوٹیاں بھی اسی علاقے میں ہیں، جنہیں سر کرنے کے لیے ہر سال غیر ملکی کوہ پیما یہاں کا رخ کرتے ہیں۔

پاکستان ٹورزم ڈویلپمنٹ کارپوریشن (پی ٹی ڈی سی) کے اعداد و شمار کے مطابق ان سیاحوں میں سے 30 فیصد پاکستانی تھے۔

ورلڈ ٹریول اینڈ ٹورزم کونسل (ڈبلیو ٹی ٹی سی) کے مطابق گزشتہ سال سیاحت سے حاصل ہونے والی آمدنی نے پاکستان کی معیشت میں تقریباً 19 ارب 40 کروڑ ڈالر کا اضافہ کیا جو مجموعی ملکی پیداوار کا 6.9 فیصد رہا۔

ساتھ ہی ’ڈبلیو ٹی ٹی سی‘ نے ایک دہائی کے عرصے میں یہ آمدنی بڑھ کر 36 ارب 10 کروڑ ڈالر ہونے کی توقع بھی ظاہر کی۔

سیاحت میں سالانہ اضافے کے علاوہ ملک میں کاروباری سفر کرنے والوں کی تعداد میں بھی کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔

سیاحت اور سفر میں تیزی سے اضافے کا بڑا سہرا انٹرنیٹ کے ذریعے مختلف سیاحتی مراکز کی تشہیر کو جاتا ہے۔

پی ٹی ڈی سی کے منیجنگ ڈائریکٹر چوہدری عبدالغفور نے سرکاری خبر رساں ایجنسی ’اے پی پی‘ کو بتایا کہ ’حکومت ملک میں سیاحت کو فروغ دینے اور پی ٹی ڈی سی کو مالی طور پر مستحکم ادارہ بنانے کی کوششیں کر رہی ہے۔‘

انہوں نے کہا کہ ’پی ٹی ڈی سی اور یونیورسٹی آف منیجمنٹ اینڈ ٹیکنالوجی (یو ایم ٹی) لاہور کے درمیان ٹورزم ڈیپارٹمنٹ کی تشہیر کی اسپانسرشپ کے لیے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط ہوچکے ہیں۔‘

پی ٹی ڈی سی کی مصنوعات اور خدمات کی سوشل میڈیا کے ذریعے بھی تشہیر کی جائے گی۔

پاکستان ٹورزم ڈویلپمنٹ کارپوریشن نے حال ہی میں ’پاکستان ٹورزم فرینڈز کلب‘ کا بھی آغاز کیا ہے جس کے ذریعے اس کے اراکین پی ٹی ڈی سی کی سہولیات پر 20 فیصد کا خصوصی ڈسکاؤنٹ حاصل کر سکیں گے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں