تل ابیب کے اطراف اور جنوبی محاذ پر آئرن ڈوم بیٹریز میں مزید اضافہ

خیال رہے کہ فلسطینی قوم امریکہ و اسرائیل کے حالیہ اقدامات کے ذمہ دار سعودی حکومت کو قرار دے رہے ہیں کیونکہ غربوں اور عربوں کے درمیان اتحاد کے سبب ہی جارح اور انتہاپسند حکومتوں کو فلسطینیوں کے خلاف جارحانہ اقدامات کی کھلی چھوٹ ملی ہے۔

تل ابیب کے اطراف اور جنوبی محاذ پر آئرن ڈوم بیٹریز میں مزید اضافہ

تسنیم خبر رساں ادارے کے مطابق اسرائیلی وزارت دفاع کے بیان میں کہاگیا ہے کہ ریزرو فورس کے ذریعے فضائی دفاعی نظام کو بھی مضبوط بنایا گیا ہے۔

خیال رہے کہ صہیونی فوج کی جانب سے یہ پیش رفت غزہ پٹی کے ساتھ سرحد پر کشیدگی میں اضافے کے بیچ سامنے آئی ہے۔

اس دوران تنازع کے دونوں فریقوں کے درمیان جنگ بندی کو مضبوط بنانے کے واسطے نام نہاد بین الاقوامی کوششیں بھی جاری ہیں۔

مبصرین کے مطابق 2014ء کے بحران کے بعد یہ اپنی نوعیت کی پہلی خطرناک چڑھائی ہے۔

ادھر مشرق وسطی میں امن عمل کے لیے اقوام متحدہ کے خصوصی رابطہ کار نکولئی ملادینوف کا کہنا تھا کہ گزشتہ چند گھنٹوں کے دوران ہونے والی بھرپور بین الاقوامی کوششوں کے ذریعے غزہ میں جنگ بھڑکنے کو روک لیا گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ آج بھی ہمیں پیچیدہ صورت حال کا سامنا ہے اور کل ہم جنگ کے دہانے پر تھے۔ یہ امر تمام جہتوں سے کثیر کاوشوں کا متقاضی ہے تا کہ ہم عدم تصادم کو یقینی بنا سکیں۔

واضح رہے کہ فلسطینی قوم اسرائیل اور امریکہ کی جانب سے حالیہ اقدامات کے ذمہ دار سعودی عرب کو قرار دے رہے ہیں کیونکہ بنی سعود نے امریکہ اور اسرائیل کیساتھ روابط بڑھادئے ہیں جس کے سبب ان دو انتہاپسند حکومتوں کو کھلی چھوٹ ملی ہے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین اسلامی بیداری خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری