مستونگ خودکش بمبار کا تعلق ایبٹ آباد جبکہ پشاور حملے کا ہنگو سے تھا

مستونگ اور پشاور کود کش حملوں کے دونوں بمبار کی شناخت ہوگئی ہے۔

مستونگ خودکش بمبار کا تعلق ایبٹ آباد جبکہ پشاور حملے کا ہنگو سے تھا

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق آئی جی بلوچستان کا کہنا ہے کہ مستونگ خودکش بمبار کی شناخت ہوگئی ہے، حملہ آور کا تعلق ایبٹ آباد سے تھا۔ سینیٹ کی داخلہ کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے آئی جی بلوچستان کا کہنا تھا کہ مستونگ میں خودکش حملہ کرنے والے کی شناخت کرلی ہے، خودکش حملہ آور کا نام حافظ نواز ہے اور تعلق ایبٹ آباد سے ہے۔

آئی جی بلوچستان نے بتایا کہ خودکش حملہ آور حافظ نواز ایبٹ آباد سے سندھ گیا جہاں وہ لشکرِ جھنگوی سمیت دیگر کالعدم تنظیموں سے وابستہ رہا اور بعد میں کالعدم شدت پسند تنظیم داعش میں شمولیت اختیار کرلی۔  بلوچستان میں ہونے والی دہشت گردی کی کارروائی بھی داعش نے ہی کی تھی۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق خودکش بمبار کے دو سہولت کاروں کا بھی پتہ چل گیا ہے، سہولت کار مفتی حیدر اور حافظ نعیم کالعدم داعش کے مقامی کمانڈر ہیں جنہیں گرفتار کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔ افغانستان میں داعش نے کنٹرول سنبھال لیا، وہاں سے بلوچستان بھی آگئی ہے۔

دوسری جانب عوامی نیشنل پارٹی کے شہید رہنما ہارون بلور کے حوالے سے خیبرپختون خوا پولیس حکام نے دعویٰ کیا ہے کہ ہارون بلور پر حملہ کرنے والے خودکش بمبار کا پتہ لگا لیا گیا ہے، خود کش حملہ آور کا تعلق ہنگو سے تھا اور اس کے دو سہولت کار تھے جن کی گرفتاری کے لئے ٹیمیں تشکیل دے دی گئی ہیں۔ ہارون بلور کو کوئی تھریٹ موصول نہیں ہوا تھا اس سلسلے میں جے آئی ٹی بنا دی گئی ہے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی پاکستان خبریں
اہم ترین پاکستان خبریں
اہم ترین خبریں