امریکی میڈیا کے بعد حکومت کو بھی کالعدم جماعتوں کے انتخاب لڑنے پر خدشات

نیویارک ٹائمز کی کالعدم تکفیری جماعتوں کے انتخابات میں حصہ لینے پر مبنی رپورٹ کے بعد امریکی وزارت خارجہ نے بھی کالعدم جماعتوں سے وابستہ انتخابی امیدواروں پر پاکستان سے اپنے تحفظات کا اظہار کردیا۔

امریکی میڈیا کے بعد حکومت کو بھی کالعدم جماعتوں کے انتخاب لڑنے پر خدشات

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق امریکا نے کالعدم لشکرِ طیبہ سے وابستہ انتخابی امیدواروں پر پاکستان سے اپنے تحفظات کا اظہار کردیا۔

واضح رہے کہ اس سے قبل امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے کالعدم تکفیری جماعتوں کے انتخاب لڑنے پر تشویش کا اظہار کیا تھا۔

اس حوالے سے امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ سے جاری مراسلے میں اس امر پر اطمینان کا اظہار کیا گیا کہ’الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کی جانب سے ملی مسلم لیگ (ایم ایم ایل) کی رجسٹریشن جون میں منسوخ کی گئی جس کے لشکرطیبہ کے ساتھ مراسم تھے اور اس کو عالمی سطح پر دہشت گرد تنظیم قرار دیا جا چکا ہے۔

مراسلے میں کہا گیا کہ اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ نے بیرون ملک دہشت گرد تنظیم کی فہرست میں ایم ایم ایل کو لشکر طیبہ کے طور پر شامل کیا ہے۔

اس میں کہا گیا کہ ’ہم نے پاکستانی حکومت سے لشکرطیبہ سمیت اس سے جوڑے انفرادی لوگوں کی جانب سے انتخابات میں حصہ لینے پر متعدد مرتبہ اپنے خدشات کا اظہار کیا ہے۔

اس سے قبل کہا گیا کہ اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ نے پاکستانی سیاستدانوں پر ٹارگیٹڈ حملوں کے باوجود انتخابی عمل کو جاری رکھنے پر زور دیا تھا۔

ڈان نیوز کے مطابق برسلز میں جاری اعلامیے میں کہا گیا کہ یورپی یونین نے اسلام آباد پر زور دیا کہ تمام سیاسی جماعتوں اور امیدواروں کو انتخابات کے دوران ’محفوظ اور صاف ماحول‘ فراہم کیا جائے۔

جاپانی وزیرخارجہ ٹارو کونو نے گزشتہ ہفتے کہا تھا کہ جاپان کی خواہش ہےکہ پاکستان میں انتخابات صاف، شفاف، پرامن ہوں اور دہشت گردوں کو جمہوری عمل میں مداخلت کا کوئی موقعہ فراہم نہ کیا جائے‘۔

واشگنٹن میں امریکی اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے ترجمان نے کہا ہے کہ سیاسی امیدوارں اور ان کے کارکنان پر حملے بزدلانہ ہیں جو پاکستانی قوم کو جمہوری حقوق سے دور نہیں رکھ سکیں گے ۔

یورپی یونین نے کہا تھا کہ وہ پاکستانی حکام سے امید کرتے ہیں کہ ملک بھر میں تمام انتخابی سرگرمیوں کے لیے سازگار اور محفوظ ماحول فراہم کرنے کے لیے ہر ممکن اقدامات اٹھائیں جائیں گے۔

اس حوالے سے مزید کہا گیا کہ ’تمام سیاسی جماعتوں، امیدواروں اور شہریوں کو دہشت گردوں کا خوف بالائے طاق رکھ کر اپنے آئینی حق کی ادائیگی کے لیے انتخابات میں حصہ لینا چاہیے‘۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی دنیا خبریں
اہم ترین دنیا خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری