امریکی صدر شیر کی دم سے نہ کھیلیں، پشیمان ہونا پڑیگا

اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر ڈاکٹر حسن روحانی نے امریکی صدر ٹرمپ کو مخاطب ہوکر کہا: "شیر کی دم سے نہ کھیلیں کیونکہ ایسا کرنے سے پشیمان ہونا پڑیگا۔"

امریکی صدر شیر کی دم سے نہ کھیلیں، پشیمان ہونا پڑیگا

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر حسن روحانی نے بیرون ملک ایرانی سفراء کے اجتماع  سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ ایرانی قوم امریکی دباؤں میں ہر گز نہیں آئے گی ۔ امریکی صدر شیر کی دم کے ساتھ کھیلنا ترک کردے ۔ مزاحمت یا تسلیم کے علاوہ کوئی اور راستہ نہیں۔

صدر حسن روحانی نے کہا کہ ایرانی سفراء بیرون ملک ایرانی تاریخ، ادب ، ثقافت اور ایرانی قوم کے نمائندے ہیں ۔ ایرانی سفراء تمام ایرانیوں کے نمائندہ ہیں۔

امریکہ کی موجودہ حکومت نے عالمی برادری کے ساتھ جنگ و جدال شروع کررکھا ہے امریکی حکومت صرف اپنے مفادات کو تحفظ فراہم کرنے کی کوشش کررہی ہے اور دوسرے ممالک کے مفادات کو پامال کررہی ہے۔

صدر حسن روحانی نے کہا کہ امریکہ کی طرف سے بین الاقوامی حقوق کی مخالفت، عالم اسلام کی مخالفت اور مسئلہ فلسطین کی مخالفت  اس دور میں بام عروج پر پہنچی ہوئی ہے۔

صدر حسن روحانی نے کہا کہ اسرائیل کی ماہیت اور حقیقت کے بارے میں ہماری بات بالکل درست  ثابت ہوئی ہے کہ اسرائیل انسانی حقوق کا سب سے بڑا دشمن ہے آج ثابت ہوگیا کہ اسرائیلی حکومت نسل پرست حکومت ہے۔

صدر حسن روحانی نے کہا کہ آج دنیا میں ایرانی سفارتکاروں کی بہت بڑی ذمہ داری ہے۔ امریکہ ایرانی قوم کا سب سے بڑا دشمن ہے اور ہمیں دشمن کی معاندانہ پالیسیوں کے بارے میں ہوشیار اور آگاہ رہنا چاہیے۔

صدر حسن روحانی نے کہا کہ ایران اور ایرانی قوم کے خلاف امریکی سازشوں کا سلسلہ جاری ہے ہم نے مشترکہ ایٹمی معاہدے کے ذریعہ ایران کے ایٹمی پروگرام کے خلاف 12 سالہ امریکی سازشوں کو ناکام بنادیا۔ ہم نے علاقائی ممالک کی دہشت گردی کے خلاف حمایت کرکے داعش کا عراق و شام سے خاتمہ کردیا ۔ہمارا ہمسایہ ممالک کے ساتھ قریبی تعاون جاری ہے۔ امریکہ ایرانی قوم کے ساتھ علاقائی اور عالمی اقوام کا بھی دشمن ہے اور ایرانی قوم کو امریکہ کی ظالمانہ اور تسلط پسندانہ  پالیسیوں کے خلاف استقامت اور پائداری پر فخر حاصل ہے۔ ہم امریکہ کی ظالمانہ اور تسلط پسندانہ پالیسیوں کا مقابلہ جاری رکھیں گے اور امریکہ کو اللہ تعالی کی مدد اور نصرت کے ساتھ شکست سے دوچار کردیں گے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی ایران خبریں
اہم ترین ایران خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری