اتحاد پہ اتحاد؛ امریکہ عرب ممالک پر مشتمل ایران کیخلاف ایک اور اتحاد بنانے جارہا ہے

ایک صہیونی روزنامہ نے آگاہ ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ ٹرمپ حکومت اب ایران کے خطے میں اثر و رسوخ کا مقابلہ کرنے کیلئے عرب ممالک پر مشتمل ایک اور اتحاد بنانے جا رہا ہے۔

اتحاد پہ اتحاد؛ امریکہ عرب ممالک پر مشتمل ایران کیخلاف ایک اور اتحاد بنانے جارہا ہے

خبر رساں ادارے تسنیم کے مطابق صہیونی روزنامہ یروشلم پوسٹ نے آگاہ ذرائع کے حوالے سے بتایا ہے کہ ٹرمپ حکومت اب ایران کے خطے میں اثر و رسوخ کا مقابلہ کرنے کیلئے عرب ممالک پر مشتمل ایک اور اتحاد بنانے جا رہا ہے۔

صہیونی اخبار کے مطابق وائٹ ہاوس منصوبہ بندی کررہا ہے کہ اکتوبر کے وسط میں ایک اجلاس بلایا جائے جس میں ممکنہ طور پر مصر، اردن اور خلیج فارس کے دیگر عرب ممالک شرکت کریں گے۔

یہ اجلاس کیمپ ڈیوڈ یا پھر واشنگٹن میں منعقد ہوگا۔

دوسری جانب ایک جرمن نشریاتی ادارے نے بھی رپورٹ دی ہے کہ  امریکہ مشرق وسطی میں اسلامی جمہوریہ ایران کے اثر و رسوخ کو ختم کرنے کے سلسلے میں  اردن و مصر سمیت خلیج فارس کے 6 عرب ممالک پر مشتمل عربی نیٹو تشکیل دینے کی کوشش کررہا ہے۔ 

جرمن ادارے کے مطابق امریکی اتحادی عرب ممالک کا یہ 2 روزہ سربراہی اجلاس واشنگٹن میں12اکتوبر کو شروع ہو گا۔ اجلاس کی امریکی اور عرب حکام نے تصدیق کردی ہے جو مڈل ایسٹ اسٹرٹیجک الائنس کے بینر تلے ہوگی، اس الائنس کو  "عرب نیٹو "  کا نام بھی دیا گیا ہے۔

اجلاس میں خلیجی ریاستیں سعودی عرب، متحدہ عرب امارات، بحرین، کویت، قطر اور عمان کے ساتھ مصر اور اردن کے رہنما شرکت کریں گے۔ باخبـر ذرائع کے مطابق سعودی عرب ، عرب نیٹو کی تشکیل میں امریکہ کو بھر پور تعاون فراہم کررہا ہے۔

عرب ذرائع کے مطابق  فلسطین کے خلاف سعودی عرب صدی کی ڈیل کو بھی پایہ تکمیل تک پہنچانا چاہتا ہے جبکہ کہا جارہا ہے کہ سعودی عرب خطے میں اسلام اور مسلمانوں کے خلاف امریکی اور اسرائیلی پالیسیوں پر عمل پیرا ہے۔

سب سے زیادہ دیکھی گئی ایران خبریں
اہم ترین ایران خبریں
اہم ترین خبریں
خبرنگار افتخاری